Monday , August 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / سندھو ، سریکانت سے انڈیا کو ریو گیمز میں کھاتہ کھولنے کی امید

سندھو ، سریکانت سے انڈیا کو ریو گیمز میں کھاتہ کھولنے کی امید

باکسنگ چیلنج وکاس کی شکست کیساتھ ختم۔ ڈسکس تھرو میں سیماکی ناکامی ۔ اتھلیٹس سربانی نندا، رنجیت مہیشوری، للیتا بابر بھی ناکام
ریو ڈی جنیرو ، 16 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) خاتون شٹلر پی وی سندھو سے یہاں جاری اولمپک گیمز کے 11 ویں روز ہندوستان کی تمغہ کی امید بندھی ہے جب انھیں کوارٹر فائنلز میں چین کی وانگ ییہان کے خلاف بڑا کٹھن چیلنج کا سامنا رہے گا، جو چار سال قبل لندن میں سلور میڈلسٹ تھی۔ حیدرآباد کی دراز قد سندھو اور کیدمبی سریکانت جو مینس سنگلز کوارٹرز تک پہنچے ہیں، وہی اس کامپٹیشن میں میڈل کے دعوے دار باقی رہ گئے ہیں جبکہ گزشتہ گیمز کی برونز میڈلسٹ اور سابق عالمی نمبر 1 سائنا نہوال کا دو روز قبل صدمہ انگیز اخراج ہوگیا۔ دو مرتبہ کی ورلڈ چمپئن شپ برونز سندھو گزشتہ روز چائنیز تائپی کی تائی زو یینگ کے مقابل 40 منٹ کے مقابلے میں 21-13، 21-15 کی غالب جیت حاصل کرتے ہوئے ویمنس سنگلز کے آخری آٹھ تک پہنچی ہیں، جس سے انھیں طاقتور ییہان کے خلاف کھیلنے کیلئے حوصلہ ملنا چاہئے۔ حیدرآباد کی 21 سالہ اسٹار نے پری کوارٹرز میچ یہاں نسبتاً آسانی سے جیتا ہے۔ سریکانت نے بھی اپنے معیار کا مظاہرہ کیا جب وہ برتر رینک کے حامل ڈنمارک کے حریف کو غیرمتوقع شکست دے کر بیڈمنٹن میں آخری آٹھ تک رسائی پانے والے ہندوستان کے دوسرے کھلاڑی بن گئے جبکہ 2012ء لندن گیمز میں پروپلی کیشپ اس مرحلے تک پہنچے تھے۔ انھیں بھی کل کوارٹرز میں بڑا چیلنج دو مرتبہ کے اولمپک چمپئن چین کے لی ڈان کے خلاف درپیش ہے جو اپنے خطاب کا دفاع کررہے ہیں جسے انھوں نے لندن میں جیتا تھا۔ گریکو۔ رومن ریسلر ہردیپ سنگھ دیگر ہندوستانی ہے جو آج دیر گئے 98kg سیکشن میں ایکشن میں ہوں گے۔

سندھو اور سریکانت کے حوصلہ افزاء مظاہرے کے ماسواء یہاں گزشتہ روز 10 ویں دن انڈیا کیلئے ایک اور نہایت مایوس کن دن گزرا۔ باکسنگ کے شعبے میں بھی مایوسی ہاتھ لگی جہاں سابق ایشین گیمز گولڈ میڈلسٹ وکاس (75kg) نے کوارٹر فائنلز میں سکنڈ سیڈ بخت میر میلی کزیف سے شکست کھا کر ان گیمز سے خارج ہوگئے، جس کے ساتھ آٹھ برسوں میں پہلی بار انڈیا کا باکسنگ چیلنج کوئی میڈل کے بغیر ختم ہوگیا۔ شیوا تھاپا (56kg) اور منوج کمار (64kg) پہلے ہی مسابقتی دوڑ سے خارج ہوجانے کے بعد آج وکاس کی ناکامی نے ان گیمز میں ہندوستانی باکسنگ چیلنج پر پردہ گرا دیا۔ یہ متواتر دوسری بار ہے کہ مرد باکسرز کوئی میڈل جیتنے میں ناکام رہے کیونکہ 2012ء کا برونز ایم سی میریکوم (51kg) سے حاصل ہوا تھا۔ اس طرح وجیندر سنگھ (75kg) بدستور پہلے اور واحد مرد انڈین باکسر برقرار رہیں جنھوں نے اولمپک میڈل (برونز) 2008ء بیجنگ گیمز میں جیتا تھا۔ انڈین کیمپ میں جاری مجموعی افسردگی میں اضافہ کرتے ہوئے ڈسکس تھروور سیما انٹل گروپ B کوالیفائنگ راؤنڈ میں نویں مقام پر اختتام کرپائی اور ملک کیلئے ایک اور مایوس کن دن مسابقتی دوڑ سے خارج ہوگئی۔ دو دیگر ہندوستانی اتھلیٹس سربانی نندا (ویمنس 200m) اور ٹریپل جمپر رنجیت مہیشوری بھی دن کے اوائل کمزور مظاہروں کے ساتھ خارج ہوگئیں جبکہ وومن اسٹیپل چیزر للیتا بابر کٹھن 3000m ایونٹ کے فائنل میں 10 ویں مقام پر اختتام کرسکیں۔ دسویں مقام کے باوجود مہاراشٹرا کے خشک سالی سے دوچار ضلع ستارا کی 27 سالہ للیتا کا مظاہرہ ٹریک ایونٹ میں کسی ہندوستانی کا پی ٹی اوشا کے بعد سے بہترین پرفارمنس ثابت ہوا۔ اوشا نے 1984ء لاس اینجلس اولمپکس میں 400m ہرڈلز میں چوتھے مقام پر اختتام کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT