Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / سنگاریڈی میں سی پی ایم کا زبردست احتجاج

سنگاریڈی میں سی پی ایم کا زبردست احتجاج

مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کیلئے قانون سازی کا مطالبہ
سنگاریڈی /17 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) میدک ضلع سی پی ایم پارٹی کے زیر اہتمام آج سنگاریڈی جدید کلکٹریٹ کے روبرو مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاجی دھرنا منظم کیا گیا ۔ اس موقع پر اے ملیش سکریٹری سی پی ایم ضلع میدک ، بی ملیش ، مانکیم ، جئے رام اراکین سی پی ایم سکریٹریٹ ضلع میدک ، محمد واجد علی قائد سی پی ایم ، محمد سردار ، محمد محبوب خان ضلع آواز کمیٹی کنوینر اور سید غوث محی الدین میناریٹی ویلفیر اسوسی ایشن صدر ضلع میدک نے احتجاجی دھرنا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلی کے سی آر مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کے اپنے انتخابی وعدے کی جلد تکمیل کیلئے اقدامات کریں ۔ اقلیتی سب پلان کیلئے قانون سازی اور مسلمانوں کو آبادی کے تناسب سے بجٹ مختص کیا جائے ۔ مسلمانوں کی ترقی میں ہی ریاست تلنگانہ کی ترقی مضمر ہے ۔ سنہرے تلنگانہ کا اعلان کرنے والی ٹی آر ایس حکومت مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات دینے کے اپنے وعدے سے متعلق خاموشی اختیار کئے ہوئے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 14 فیصد مسلمانوں کے منجملہ 80 فیصد مسلمانوں کی معاشی حالت انتہائی ابتر ہے ۔ریاست تلنگانہ میں اقلیتوں کی آبادی 80 لاکھ کے منجملہ 15 لاکھ خاندان موجود ہیں جن میں 80 فیصد اقلیتوں کے منجملہ 12 لاکھ خاندان سطح غربت سے بھی نچلی سطح پر زندگی گذارنے پر مجبور ہیں اور روزگار کے موقعوں کی عدم فراہمی کی وجہ سے چھوٹے چھوٹے کاروبار کر رہے ہیں ۔ سی پی ایم قائدین نے کہا کہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی اقلیتی سب پلان قانون سازی تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی ۔ اس خصوص میں سی پی ایم گذشتہ ایک ماہ سے راؤنڈ ٹیبل کانفرنس ، پمفلیٹس اور کتابچوں کی تقسیم مسلمانوں کے محلہ جات میں شعور بیداری اجلاس اور تلنگانہ کے دس اضلاع میں بس یاترا منظم کی گئی ۔ بعد ازاںمذکورہ بالا مسلمانوں کے مسائل پر مبنی ایک یادداشت جدید کلکٹریٹ سنگاریڈی میں ڈی آر او دیاننت کو پیش کرتے ہوئے نمائندگی کی ۔ اس موقع پر یادو ریڈی ، پراوین کمار و دیگر ضلعی قائدین موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT