Saturday , October 21 2017
Home / شہر کی خبریں / سنہرے تلنگانہ کے خواب کی تعبیر کیلئے عمل کی ضرورت

سنہرے تلنگانہ کے خواب کی تعبیر کیلئے عمل کی ضرورت

ملک معتصم خان سکریٹری شعبہ ملی و ملکی اُمور جماعت اسلامی ہند تلنگانہ کا بیان

حیدرآباد۔23اگست ( پریس نوٹ ) جناب ملک معتصم خان سکریٹری شعبہ ملکی ‘ ملکی و عالمی اُمور جماعت اسلامی ہند تلنگانہ نے موجودہ ریاست تلنگانہ کو سنہری تلنگانہ کے خواب کی تعبیر کے حصول کی یاد دہانی کراتے ہوئے جناب وزیر اعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ سے مطالبہ کیا کہ ریاست تلنگانہ کا قیام عمل میں آکر تقریباً 2سال کا عرصہ مکمل ہونے جارہا ہے لیکن جو وعدے جو تیقنات کئے گئے تھے اور جو خواب ریاست تلنگانہ کی عوام کو دکھائے گئے تھے اس کی تعبیر پوری ہوتی ہوئی نظر نہیں آرہی ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ نے الیکشن سے قبل اقلیتی طبقہ خاص کر مسلمانوں کی فلاح و بہبود اور ان کی ترقی کیلئے ریزرویشن کو 4% فیصد سے 12فیصد تک بڑھانے کے سلسلہ میں حکومت ٹاملناڈو جیسی مثال قائم کرنے کا وعدہ کیا ۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ مسلم ریزرویشن کے سلسلہ میں وہ فوراً اقدامات کریں اور ریاست تلنگانہ کے بی سی کمیشن کے ذریعہ سفارشات حاصل کرتے ہوئے اس پر عمل آوری کو یقینی بنائیں ۔ ریاست تلنگانہ کے عوام بالخصوص مائناریٹیز کی معاشی پسماندگی و بدحالی کو دور کرنے کے سلسلہ میں مختلف اسکیمات اور منصوبوں کے ذریعہ اس پر قابو پانے اور جس کا  ذکر ٹی آر ایس نے اپنے منشور میں بھی کیا ہے ‘ ان امور پر خاص توجہ دینے اور اس پر اپنی کوششیں کرنے کے جو وعدے کئے ہیں ان پر عملی نمونہ پیش کیا جائے تاکہ تلنگانہ کی عوام کے ساتھ انصاف ہو ۔ حکومت  تلنگانہ میں ہونے والے تقررات سے قبل 12%فیصد مسلم ریزرویشن کو عملی جامہ پہنایا جائے اور اس سے مستفید ہونے کا موقع دے ۔ جناب ملک معتصم خان نے مزید کہا کہ روزگار کے معاملہ میں کنٹراکٹ کی بنیاد پر کام کرنے والوں کو ریگولر کرنے کے مسئلہ کو بھی فوری حل کیا جائے ۔ انہوںنے ٹی آر ایس کے منشور کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بنگارو تلنگانہ کے آغاز سے عوام کی ترقی و بہبود کا جو وعدہ کیا گیا تھا جبکہ اس کیلئے حکومت تلنگانہ کے پاس تمام وسائل و ذرائع موجود ہیں ‘ اُس پر بھی توجہ دیں تو موجودہ حکومت اور جناب چندر شیکھر راؤ  تاریخ میں ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے ۔ انہوں نے حکومت تلنگانہ سے اپیل کی کہ وہ اپنے وعدوں کو پورا کریں تاکہ حکمرانی اور انصاف کے تقاضوں کی تکمیل ہو۔

TOPPOPULARRECENT