Sunday , September 24 2017
Home / جرائم و حادثات / سوتیلی ماں کا لڑکیوں کو جسم فروشی پر بھیجنے کا واقعہ

سوتیلی ماں کا لڑکیوں کو جسم فروشی پر بھیجنے کا واقعہ

اسکول ٹیچر چائیلڈ پروٹیکشن سے رجوع، پولیس ماں کیخلاف کارروائی سے قاصر
حیدرآباد 4 نومبر (سیاست نیوز) شہر کے نواحی علاقہ مائیلار دیو پلی میں ایک دل دہلادینے والا انسانیت سوز واقعہ پیش آیا۔ ایک سوتیلی ماں نے اپنی دو جڑواں لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کردیا۔ ان کمسن اسکول جانے والی جڑواں لڑکیوں کو اس بے رحم ماں نے رات میں کاروبار پر روانہ کرنا شروع کردیا تھا۔ ظلم و اذیت کا شکار ان لڑکیوں کی درد بھری داستاں اس وقت منظر عام پر آئی جب اسکول ٹیچر کی دلچسپی سے چائیلڈ پروٹیکشن عہدیداروں نے مسئلہ کو پولیس سے رجوع کردیا۔ تاہم اس وقت بھی مائیلار دیو پلی پولیس خواب غفلت کا شکار تھی اور شکایت کے بعد بھی پولیس ماں کے خلاف کارروائی کرنے سے پس و پیش کا شکار ہے۔ اس واقعہ پر ڈیویژن سطح کے اعلیٰ پولیس عہدیدار بھی لاپرواہی کا شکار نظر آرہے ہیں۔ ان عہدیداروں کو یا تو معاملہ کی سنجیدگی اور حساسیت کا علم نہیں یا پھر مبینہ طور پر پولیس عہدیدار اس معاملہ کو دبانا چاہتے ہیں۔ اس خصوص میں متعلقہ پولیس انسپکٹر سے رابطہ قائم کرنے پر وہ دستیاب نہ ہوسکے۔ جبکہ ان کے متبادل انچارج عہدیدار بھی اس معاملہ میں بات کرنے تیار نہیں ہیں جس کے بعد ڈیویژن سطح کے عہدیدار راجندر نگر اے سی پی مسٹر گنگی ریڈی سے بات کرنے پر انھوں نے لاعلمی کا اظہار کیا اور تفصیلات بتانے سے صاف طور پر انکار کردیا۔ پولیس کا یہ رویہ تشویش اور شبہات کا باعث بنا ہوا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ مائیلار دیو پلی کے علاقہ میں واقع راجیو گروہا کلپا لکشمی گوڑہ اپارٹمنٹ میں رہنے والی دو جڑواں بہنوں کو اس کی سوتیلی ماں ایک ذرائع سے حقیقی والدہ بھی بتایا، رات کے وقت جسم فروشی کے لئے روانہ کرتی تھی۔ خاتون جس کا نام کرن مشرا بتایا گیا ہے، مہدی پٹنم کے علاقہ ریتی باؤلی میں سکیورٹی گارڈ کی خدمات انجام دیتی ہے۔تاہم پولیس ذرائع سے اس بات کی توثیق نہیں ہوسکی اس کی دو لڑکیاں چوتھی جماعت کی طالبات ہیں۔ باوثوق ذرائع کے مطابق مشرا ہی گاہکوں کے یہاں اپنی لڑکیوں کو رات گزارنے کے لئے روانہ کرتی تھی اور لڑکیوں کو یہ بات پسند نہیں تھی۔ گزشتہ دن ایک لڑکی نے پیٹھ درد کی شدید تکلیف کا اظہار کیا جب وہ اسکول میں تھی۔ ایک اسکول ٹیچر نے اس لڑکی کو ڈاکٹرس سے رجوع کیا جہاں لڑکی نے جنسی استحصال اور ظلم و زیادتی کا انکشاف ہوا۔ جس کے بعد چائیلڈ پروٹیکشن سیل کے عہدیداروں نے مائیلاردیو پلی پولیس میں شکایت درج کروائی۔

TOPPOPULARRECENT