Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / سوریڈو کی چیف منسٹر اے پی چندرا بابو سے ملاقات

سوریڈو کی چیف منسٹر اے پی چندرا بابو سے ملاقات

جگن کی پریشانی میں اضافہ ، کئی قیاس آرائیوں کا جنم
حیدرآباد۔/4مارچ، ( سیاست نیوز) سابق چیف منسٹر ڈاکٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کے پرسنل سکریٹری سوریوڈو کی چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو سے مبینہ ملاقات نے آندھرا پردیش کے سیاسی حلقوں میں ہلچل پیدا کردی ہے۔ سوریوڈو جمعرات کی شام وجئے واڑہ میں چیف منسٹر کیمپ آفس پہنچے اور وہاں کافی دیر تک اُن کی موجودگی نے کئی قیاس آرائیوں کو جنم دیا ہے۔ سوریوڈو کی یہ ملاقات ایسے وقت پر ہوئی ہے جبکہ وجئے واڑہ میں بعض تلگودیشم قائدین اور وزراء کی جانب سے اراضی کی خریدی معاملہ پر میڈیا میں کئی خبریں منظر عام پر آئی ہیں جس سے حکومت اور اپوزیشن دونوں کیمپس میں ہلچل ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ سوریوڈو شام 5:30بجے سی ایم کیمپ آفس پہنچے اور چیف منسٹر چندرا بابونائیڈو کی آفس سے روانگی کے بعد بھی وہ دفتر میں موجود رہے۔ اطلاعات کے مطابق وہ 20منٹ تک چندرا بابو نائیڈو کے ساتھ رہے اور سمجھا جاتا ہے کہ کئی مسائل پر دونوں میں بات چیت ہوئی۔ سوریوڈو کا شمار آنجہانی چیف منسٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کے انتہائی بااعتماد رفقاء میں ہوتا ہے اور وہ کئی نجی معاملات سے اچھی طرح واقف ہیں۔ راج شیکھر ریڈی کے انتقال کے بعد سوریوڈو کچھ دن وائی ایس جگن موہن ریڈی کے ساتھ نظر آئے بعد میں وہ اس خاندان سے دور ہوگئے جس کی وجوہات کا کسی کو علم نہیں ہے۔ دارالحکومت امراوتی میں وزراء اور تلگودیشم کے سینئر قائدین کی جانب سے اراضی کی خریدی کے معاملات کے پس منظر میں چیف منسٹر سے سوریوڈو کی ملاقات کو اہمیت حاصل ہوچکی ہے۔ چیف منسٹر کے دفتر نے اگرچہ سوریوڈو کی چندرا بابو نائیڈو سے ملاقات کی تردید کی تاہم ان کی کیمپ آفس میں آمد کی تردید نہیں کی۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ سوریوڈو نے بعض سینئر آئی اے ایس عہدیداروں سے ملاقات کی۔ سوریوڈو کی چندرا بابو نائیڈو سے ملاقات قائد اپوزیشن جگن موہن ریڈی کیلئے پریشانی کا سبب بن سکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT