Friday , October 20 2017
Home / جرائم و حادثات / سوشیل میڈیا پر مذہب کی بے حرمتی پر کارروائی

سوشیل میڈیا پر مذہب کی بے حرمتی پر کارروائی

کالاپتھر سے ایک شخص گرفتار و عدالت و پیشکشی
حیدرآباد ۔ 3 ڈسمبر (سیاست نیوز) سوشیل میڈیا کے استعمال میں لاپرواہی قانونی کارروائی کا سبب بن سکتی ہے۔ حساس معاملات بالخصوص مذہبی معاملات میں بے احتیاطی اور چالاکی پر سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ یہ بات ایڈیشنل کمشنر آف پولیس ساؤتھ زون مسٹر بابو راؤ نے بتائی۔ انہوں نے بتایا کہ ایک شخص کو کالاپتھر پولیس نے گرفتار کرتے ہوئے عدالتی تحویل میں دے دیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کل رات ایک نوجوان نے کالاپتھر پولیس میں شکایت درج کرائی تھی اور فیس بک پر مسلم مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کی کوشش کرتے ہوئے ایک تصویر پوسٹ کی گئی۔ پولیس نے فوری حرکت میں آتے ہوئے اس شکایت کے خلاف کارروائی انجام دی اور کالاپتھر میں مقیم ایک 25 سالہ شخص ستیہ رنجن مہارانہ کو گرفتار کرتے ہوئے اسے عدالتی تحویل میں دے دیا۔ بتایا جاتا ہیکہ قبل ازیں گذشتہ بھی اس طرح کی مذموم کوشش کرتے ہوئے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔ تاہم مسلم مذہبی رہنماؤں کی اپیل اور پرامن احتجاج کے بعد پولیس کمشنر نے سخت گیر اقدامات کا تیقن دیا تھا۔ باوجود اس کے حیدرآباد کی پرامن فضاء کو مکدر کرنے کی بار بار کوشش کی جارہی ہیں اور کسی نہ کسی وجہ سے چونکہ سب سوشیل میڈیا کا دور ہے ، غیرسماجی امن کے دشمن شرپسند عناصر سوشیل میڈیا کا سہارا لیتے ہوئے مذہبی حملہ کررہے ہیں۔ پولیس کو چاہئے کہ وہ اس سلسلہ میں مزید چوکسی اختیار کرتے ہوئے سخت اقدامات کریں تاکہ ایسے واقعات رونما نہ ہونے پائیں۔

TOPPOPULARRECENT