Tuesday , October 17 2017
Home / ہندوستان / سومناتھ بھارتی گرفتاری سے بچنے کیلئے ہائیکورٹ سے رجوع

سومناتھ بھارتی گرفتاری سے بچنے کیلئے ہائیکورٹ سے رجوع

دو دن کی عبوری راحت ، خودسپردگی اختیار کرنے عام آدمی پارٹی کا مشورہ ، موجودہ طرزعمل سے غلط اشارے ملنے کا دعویٰ
نئی دہلی ۔15 ستمبر۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) عام آدمی پارٹی رکن اسمبلی سومناتھ بھارتی آج دہلی ہائیکورٹ سے رجوع ہوئے تاکہ گھریلو تشدد اور اقدام قتل مقدمہ کے سلسلے میں گرفتاری سے بچا جاسکے ۔ عدالت نے دہلی پولیس کو ہدایت دی ہے کہ جمعرات تک اُن کیخلاف کوئی کارروائی نہ کی جائے ، اس طرح انھیں دو دن کی عبوری راحت فراہم ہوئی ہے ۔ سومناتھ بھارتی کی اہلیہ لپیکا بھارتی نے یہ مقدمہ درج کیا ہے ۔ جسٹس بی ڈی احمد اور جسٹس سنجیو سچدیو پر مشتمل بنچ نے بھارتی کی درخواست کی سماعت سے اتفاق کیا ہے ۔ اُن کے سینئر وکیل دیان کرشنن نے عدالت کو بتایا کہ یہ معاملہ ہنگامی نوعیت کا ہے کیونکہ کسی بھی وقت سومناتھ بھارتی کو گرفتار کیا جاسکتا ہے۔

انھوں نے یہ بھی بتایا کہ دہلی پولیس کمشنر کا بھی یہ بیان ہے کہ سومناتھ بھارتی کی کسی بھی وقت گرفتاری ممکن ہے ۔ چنانچہ ججس نے اس درخواست کی آج ہی سماعت سے اتفاق کیا ۔ واضح رہے کہ کل ایڈیشنل سیشن جج سنجے گارگ نے سومناتھ بھارتی کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری کو مسترد کردیا تھا ۔ بعد ازاں میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ نے اُن کے خلاف اُس وقت ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کیا جب دہلی پولیس نے اپنی درخواست میں یہ استدلال کیا کہ سومناتھ بھارتی تحقیقات میں تعاون نہیں کررہے ہیں اور تین مرتبہ سمن جاری کئے جانے کے باوجود تفتیش کیلئے اب تک حاضر نہیں ہوئے ۔ سومناتھ بھارتی کی اہلیہ نے کہا تھا کہ اُن کے بچے متاثر ہورہے ہیں اور سومناتھ بھارتی  اُنھیں بچوں کے سامنے مرنے کیلئے چھوڑ کر چلے گئے تھے۔ وہ اپنے شوہر سے محبت کرتی ہیں اور اسی وجہ سے پانچ سال تک ظلم و اذیت برداشت کرتی رہیں۔ انھوں نے عدالت کی جانب سے اس معاملے میں مصالحت کی پیشکش قبول کرنے سے انکار کردیا تھا ۔

اس دوران عام آدمی پارٹی نے رکن اسمبلی سومناتھ بھارتی کو مشورہ دیا ہے کہ وہ پولیس کے روبرو خود سپردگی اختیار کرلیں۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ سومناتھ بھارتی کے موجودہ رویہ سے قیادت ناراض ہے اور اُن سے ربط بھی قائم نہیں ہورہا ہے ۔ عام آدمی پارٹی لیڈر اشوتوش نے کہا کہ ہم نے اُن سے ربط قائم کرنے کی کوشش کی لیکن اب تک ایسا نہیں ہوپایا ہے ۔ ہم نے اُنھیں مشورہ دیا ہے کہ وہ پولیس کے روبرو خودسپردگی اختیار کریں۔ اس دوران پارٹی ذرائع نے بتایا کہ سومناتھ بھارتی کے موجودہ طرز عمل سے غلط پیام مل رہا ہے اور عام آدمی پارٹی کا یہ موقف ہے کہ دہلی پولیس اُن کے ارکان اسمبلی کو گرفتار کرتے ہوئے نشانہ بناسکتی ہے ۔ عام آدمی پارٹی کے تین ارکان اسمبلی سابق وزیر قانون جتیندر سنگھ تومر ، منوج کمار اور سریندر سنگھ کو دہلی پولیس کی گرفتاری کا سامنا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT