Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / سونا خریدی کے رحجان میں غیر معمولی اضافہ

سونا خریدی کے رحجان میں غیر معمولی اضافہ

دو ہزار کی نوٹ بندی کی افواہ کے بعد چوکنا ، تاجرین فائدہ اٹھانے کوشاں
حیدرآباد /2 اگست ( سیاست نیوز ) 2 ہزار روپئے کی نوٹ بند ہونے کی افواہوں کے درمیان سونے کی قیمتوں میں اضافہ ہونے کے باوجود عوام میں اچانک سونا خریدنے کا رحجان تیزی سے بڑھ گیا ہے ۔ عوام آثاثہ جات اکٹھا کرنے سے زیادہ سونا خریدنے کو ترجیح دے رہے ہیں ۔ حالیہ دنوں میں یہ افواہیں کافی گشت کر رہی تھی کہ 2 ہزار روپئے کی نئی نوٹ بند ہوجائے گی ۔ جن لوگوں کے پاس کالا دھن تھا ۔ انہوں نے منسوخ شدہ نوٹ 2 ہزار روپئے کی شکل میں تبدیل کرلیا ہے۔ کالا دھن رکھنے والوں کو ایک اور جھٹکہ دینے کیلئے دو ہزار روپئے کبھی بھی نوٹ بند کی جارہی ہے ۔ حالانکہ ریزرو بنک آف انڈیا ( آر بی آئی ) نے 2 ہزار روپئے کی نوٹ کو منسوخ کرنے کا کوئی ارادہ ہونے کی تردید کی ہے ۔ تاہم عوام کو چھوٹے نوٹوں کی دستیابی کیلئے 200 روپئے کی نئی نوٹ جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ لیکن وزیر اعظم نریندر مودی نے گذشتہ سال 8 نومبر کو 500 اور 1000 روپئے کی نوٹوں کو منسوخ کرنے کا اچانک جو فیصلہ کیا تھا اس سے عوام بالخصوص کالادھن رکھنے والے سنبھل ہی نہیں پائے ۔ وہ مزید تجربات سے گذرنے اور آزمائش کا سامنا کرنے کیلئے تیار نہیںہے ۔ اس کے علاوہ ایک ملک اور ایک ٹیکس کے نعرے سے لاگو کیا گیا جی ایس ٹی بھی بہت بڑا بوجھ ثابت ہو رہا ہے ۔ اراضیات ، مکانات اور دوسری اشیاء کی خریدی پر بھی انکم ٹیکس اپنا اثر دیکھا رہا ہے ۔ تمام زاویوں سے جائز لینے کے بعد عوام بالخصوص دولتمند افراد سونے کی خریدی کو ہی محفوظ اور ضمانت والا اثاثہ محسوس کر رہے ہیں ۔ سونے کی قیمتوں میں اضافے کے باوجود اس کی خریدی میں زبردست اضافہ ہوگیا ہے ۔ ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ سونے کی خریدی پر مرکزی حکومت نے جو قواعد کو متعارف کر رہا ہے اس کو بھی عبور کرنے سے گریز نہیں کیا جارہا ہے ۔ سونے کا کاروبار کرنے والوں نے حالت کا فائدہ اٹھاتے ہوئے خریداروں میں نئی نئی امیدوں جگاتے ہوئے اپنے کاروبار میں چار چاند لگانے کا کوئی بھی موقع ضائع ہونے نہیں دے رہے ہیں ۔ گذشتہ سال کے بہ نسبت جاریہ سال سونے کے برآمد میں صد فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ سونے کی مانگ کتنی بڑھ گئی ہے ۔ چند دن سے قبل تک ہندو مقدس دن آشاڈھام سیل اور شراوانم سیل کے دوران بڑے پیمانے پر سونے کی فروخت ہوئی ہے ۔ سونے کے کاروبار کرنے والوں نے بھی کئی آفرس دیتے ہوئے عوام کو اپنی طرف راغب کرنے کی ہر ممکنہ کوشش کی ہے ۔ نوٹ بندی کے بعد ڈیجیٹل لین دین کا آغاز ہونے سے کالادھن کو سفید کرنے کے مواقع گھٹ گئے ہیں جس سے کالادھن رکھنے والوں نے نیا راستہ اختیار کرتے ہوئے سونے پر زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کرنا شروع کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT