Monday , June 26 2017
Home / شہر کی خبریں / سٹی کالج عمارت کی عظمت رفتہ کی بحالی کا آغاز

سٹی کالج عمارت کی عظمت رفتہ کی بحالی کا آغاز

تزئن نو کا آغاز ، مرکزی و ریاستی حکومتوں کا تعاون
حیدرآباد /18 مئی ( سیاست نیوز ) سٹی کالج عمارت کی عظمت رفتہ کی بحالی کا آغاز ہوچکا ہے ۔ شہر حیدرآباد کی تاریخی عمارتوں بلکہ شہر کی تاریخ حیثیت کو دوبالا کرنے والی عمارتوں میں شمار کی جانے والی اس عمارت کی تزئن نو کا کام امکان ہے کہ ماہ ستمبر تک مکمل کرلیا جائے گا ۔ مرکزی و ریاستی حکومت کے تعاون سے یہ کام عمل میں لائے جارہے ہیں ۔ اس کام کو کافی اہمیت دی جارہی ہے ۔ چونکہ شہر کے درمیان واقع موسی ندی کے کنارے خوبصورت دیدہ زیب اور فن تعمیر کی اپنی الگ پہچان رکھنے والی اس عمارت نے تعمیر کے بعد بھی کئی تراویخ کی ہیں ۔ درس و تدریس اور علم و فنوں کے مراکز میں ایک تاریخی ثقافتی حیثیت کی حامل اس عمارت کی ترقی یقیناً شہر حیدرآباد کے علاوہ ملک و بیرون ملک مقیم شہریوں کیلئے کافی مسرت کا باعث بنے گا ۔ چونکہ قدیم حیدرآبادی شہریوں کو اس عمارت سے وابستگی کا رشتہ ہی کچھ اٹوٹ ہے ۔ ہائی کورٹ سے متصل اور موسی ندی کے کنارے قریب موسی ندی کے پل کا راستہ یہ سب حیدرآبادی تہذیب کا ایک حصہ بن گیا ہے ۔اس عمارت کے تحفظ کیلئے کئی اقدامات کئے گئے تھے اور ہریٹیج کنزرویشن کمیٹی نے اس عمارت کو گریڈ 2B درجہ میں رکھتے ہوئے اس کے تحفظ پر زور دیا تھا ۔ آثار قدیمہ یا پھر میوزیم کے حوالے کرنے کی سال 2001 میں تجویز بھی پیش کی تھی ۔ اس عمارت کی تزئین نو کے کاموں کا آغاز کردیا گیا ہے اور روزانہ 20 مزدور عمارت کی تعمیر کیلئے ضروری اشیاء کی تیاری میں جٹ گئے ہیں ۔ پہلے مرحلے کے تحت کاموں کی تکمیل کیلئے ایک کروڑ 10 لاکھ روپئے سے کام کی شروعات کی گئی ہے ۔ یہ رقم راشٹر چترا شکھشا ابھیان مرکزی حکومت کے طرف سے جاری کی گئی ہے ۔ اس کے علاوہ ریاستی حکومت کی جانب سے ایک کروڑ 83 لاکھ روپئے جاری کئے گئے ۔ تلنگانہ اسٹیٹ میڈیکل سرویس اینڈ انفراسٹکچر ڈیولپمنٹ کارپوریشن کی جانب سے اس فنڈ کو جاری کیا گیا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ عمارت کی تعمیری اشیاء کی تیاری کیلئے 2 ماہ کا وقت درکار ہوسکتا ہے ،۔ یہ عالیشان عمارت جو کہ 16 ہزار اسکوائر فٹ پر محیط ہے مرمتی کاموں کے آغاز کے بعد امکان ہے کہ ستمبر میں اپنی قدیم خوبصورتی کے ساتھ بحال ہوجائے گی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT