Sunday , October 22 2017
Home / ہندوستان / سپریم کورٹ میں سزائے موت کی تعمیل پرحکم التواء

سپریم کورٹ میں سزائے موت کی تعمیل پرحکم التواء

نئی دہلی ۔ 10 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج ایک 55 سالہ مجرم کی سزائے موت پر حکم التواء جاری کردیا ہے جسے قبل ازیں مہاراشٹرا میں سال 2008 ء میں ایک 4 سالہ لڑکی عصمت ریزی اور پتھروں سے مار مار کر قتل کردینے کے الزام میں پھانسی کی سزا سنائی گئی تھی ۔ جسٹس دیپک مصرا اور ایف نریمان اور یویو ملیت پرشتم بنچ نے سزا یافتہ مجرم و سنت سمپتھ دوپرے کی درخواست نظر ثانی کو کھلی عدالت میں سماعت سے اتفاق کرلیا۔ عدالت نے کہا کہ آپ لوگ (وکلاء) ہمیں یہ قائل کروائیں کہ ہمارا فیصلہ کس طرح غلط ہے اور اس وقت تک سزائے موت کی تعمیل پرحکم التواء جاری کیا جاتاہے ۔ سپریم کورٹ نے 26 نومبر 2014 ء کو بامبے ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف وسنت سمپتھ کی اپیل کو مسترد کردیا اور عصمت ریزی و قتل کیس میں سزائے موت کو برقرار رکھا تھا اور کہا تھا کہ کمسن لڑکی کے جسم پر زخموں کے نشان انتہائی دلخراش اور سماج کیلئے لرزہ خیز ہے جبکہ مقامی عدالت نے بھی ملزم کو سزائے موت دی تھی۔

TOPPOPULARRECENT