Tuesday , April 25 2017
Home / شہر کی خبریں / سپریم کورٹ کے حکم سے ہوٹلس ، کلبس کو ایک لاکھ کروڑ کا نقصان

سپریم کورٹ کے حکم سے ہوٹلس ، کلبس کو ایک لاکھ کروڑ کا نقصان

شاہراہوں پر شراب کی فروخت پر امتناع سے 5 کروڑ لوگوں کا زور گار متاثر ہوگا : پیانل
حیدرآباد ۔ 6 ۔ اپریل : ( ایجنسیز ) : ٹورازم اینڈ ہاسپٹلٹی انڈسٹری نے اس خدشہ کا اظہار کیا ہے کہ ریاستی اور قومی شاہراہوں پر واقع اسٹابلشمنٹس پر شراب کی فروخت پر امتناع سے متعلق سپریم کورٹ کے حکم کے باعث کئی ہوٹلس اور کلبس جنہیں سیاحت کے زمرہ کے تحت منظوری دی گئی ہے بری طرح متاثر ہوجائیں گے اور ان کا بزنس ٹھپ ہوجائے گا ۔ اس امتناع سے اس شعبہ میں راست یا بالواسطہ طور پر روزگار سے جڑے ہوئے تقریبا پانچ کروڑ لوگوں کا روزگار متاثر ہو کر رہ جائے گا ۔ فیڈریشن آف اسوسی ایشنس آف انڈین ٹورازم اینڈ ہاسپٹلٹی کی جانب سے اس سلسلہ میں اسٹیک ہولڈرس کے ساتھ مشاورت کی جارہی ہے تاکہ اس بنیاد پر ایک درخواست نظر ثانی داخل کی جائے کہ ہوٹلس / کلبس شراب کی دوکانات کے برعکس ان کی عمارت کے باہر شراب پینے کے لیے شراب فروخت نہیں کرتے ہیں ۔ اسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ ترقی یافتہ ممالک جیسے امریکہ ان کے ہائی وے ۔ لیڈ ٹورازم ماڈل سے سیاحت کو فروغ دینے میں کامیاب ہیں ۔ اگر ہوٹلس اور کلبس کو سیاحتی مقامات سے ہٹا دیا گیا تو ہندوستان میں سیاحت کا فروغ رک جائے گا ۔ فیڈریشن کے چیرمین مسٹر ناکل آنند نے کہا کہ ٹورازم اینڈ ہاسپٹلٹی انڈسٹری انسانی زندگیوں کے تحفظ کے لیے کیے جانے والے فیصلے کا احترام کرتی ہے تاہم ایک ماڈل باڈی کے طور پر ہم اس پر اہم اسٹیک ہولڈرس کے ساتھ اس بات کا جائزہ لے رہے ہیں کہ اس سلسلہ میں کیا کیا جاسکتا ہے ۔ سپریم کورٹ کے حکم سے ریاستوں میں ہوٹلس اور کلبس کو ایک لاکھ کروڑ روپئے کا نقصان ہوسکتا ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT