Wednesday , June 28 2017
Home / Top Stories / سڑکوں ، ریلویز ، ایرپورٹس اور ڈیجیٹل شعبوں کی ترقی کیلئے وزیراعظم کا زور

سڑکوں ، ریلویز ، ایرپورٹس اور ڈیجیٹل شعبوں کی ترقی کیلئے وزیراعظم کا زور

پردھان منتری گرام سڑک یوجنا کے تحت دیہی سڑکوں کی تعمیر کا روزانہ تناسب ، 130 کیلومیٹر ،نیتی آیوگ سی ای او کا بیان
نئی دہلی۔ 26 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے زور دے کر کہا کہ ملک میں سڑکوں، ریلویز، ایرپورٹس اور ڈیجیٹل شعبوں کو تیز تر ترقی دینے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ انفراسٹرکچر پراجیکٹس کی وقت پر تکمیل کیلئے سخت اصولوں پر عمل کیا جائے۔ سرکاری شعبوں کا ایک دوسرے سے تال میل ضروری ہے۔ ایک اجلاس میں نیتی آیوگ کے سی ای او امیتابھ کانت نے نمائندگی کرتے ہوئے کہا کہ انفراسٹرکچر شعبوں اور کئی دیگر علاقوں میں قابل قدر پیشرفت ہورہی ہے۔ اس اجلاس کو بتایا گیا کہ پردھان منتری گرام سڑک یوجنا کے تحت دیہی سڑکوں کی تعمیر کیلئے مقررہ نشانہ کو پورا کرنے پر توجہ دی جارہی ہے۔ روزانہ کی اساس پر 130 کیلومیٹر کے تناسب سے سڑکوں کی تعمیر ہورہی ہے۔ اس میں پردھان منتری گرام سڑک یوجنا کے تحت سڑکوں کی تعمیر سال 2016-17ء میں 47,400 کیلومیٹر رہی اور اس میں مزید 11,641 کیلومیٹر کا اضافہ ہوا ہے۔ وزیراعظم کے دفتر سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا ہے کہ چار گھنٹے سے زائد چلے اجلاس میں ملک کے اندر سڑکوں، ریلوے لائینس، ایرپورٹس کی تعمیر پر خصوصی توجہ دی گئی۔ 4000 کیلومیٹر دیہی سڑکوں کو مالیاتی سال 2017ء میں گرین ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے تعمیر کیا گیا۔ اس کے لئے غیرروایتی میٹیریل کا استعمال کیا گیا

جیسے پلاسٹک کا فضلا، لوہا اور کاپر وغیرہ کا میٹیریل ملاکر سڑکوں کو تعمیر کیا جارہا ہے۔ وزیراعظم نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ دیہی سڑکوں کی تعمیر کے کاموں کی باریک بینی سے نگرانی کریں اور ان سڑکوں کی پائیداری کا خاص خیال رکھیں۔ اس کے لئے اس ٹیکنالوجی کے استعمال پر بھی زور دیا۔ سڑکوں کی تعمیر کے ساتھ دور دراز کے غیرمربوط علاقوں کو مربوط کرنے پر توجہ دی جائے۔ وزیراعظم نے سڑکوں کی تعمیر کے لئے نئی ٹیکنالوجی کے استعمال کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے نیتی آیوگ سے کہا ہے کہ وہ انفراسٹرکچر کی اختراع کے لئے ٹیکنالوجی کے نت نئے اپلیکیشن میں عالمی معیارات کو ملحوظ رکھا جائے۔ ہائی ویز شعبہ میں 4 یا 6 لائن کی قومی شاہراہوں کو 26,000 کیلومیٹر تک تعمیر کا سال 2017ء کا نشانہ مقرر کیا گیا ہے۔ ریلویز سیکٹر میں سال 2016-17ء کے لئے 953 کیلومیٹر کی نئی لائنوں کا نشانہ مقرر کیا گیا تھا۔ ان میں 2000 کیلومیٹر تک پٹریوں کو برقیانہ گیا ہے۔ 1000 کیلومیٹر کی ریلوے لائن کے گیج کی بھی تبدیلی لائی گئی ہے۔ بغیر آدمی والے ریلوے کراسنگ کے 1500 مقامات کو ترقی دی گئی ہے۔ صارفین کے تجربات کو ملحوظ رکھتے ہوئے وائی فائی تک رسائی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ 115 ریلوے اسٹیشنوں میں وائی فائی کا کنکشن فراہم کیا گیا ہے۔ 34,000 بائیو ٹائیلیٹس بھی قائم کئے گئے ہیں۔ بندرگاہی شعبہ میں بھی ساگر ملا پراجیکٹ کو ترقی دی جارہی ہے۔ ہوا بازی شعبہ میں علاقائی رابطہ کاری اسکیم کے ساتھ 43 مقامات تک فضائی سرویس کو مربوط کیا گیا ہے۔ سالانہ 282 ملین فضائی سفر کرنے والے مسافرین اس پراجیکٹ سے استفادہ کررہے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT