Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / سکھ دشمن فسادات 1984 کا مجرم ضمانت پر رہا

سکھ دشمن فسادات 1984 کا مجرم ضمانت پر رہا

نئی دہلی ۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) دہلی ہائیکورٹ نے آج سابق کانگریس کونسلر جو 1984 سکھ دشمن فسادات مقدمہ میں عمر قید بھگت رہا ہے، اپنی جائیداد کی فروخت اور اپنے وکلاء کو ادائیگی کرنے کیلئے رقومات کی فراہمی کیلئے 14 دن کی ضمانت پر رہائی منظور کی ہے۔ کارگذار چیف جسٹس گیتا متل اور جسٹس انو ملہوترہ نے ملوان کھوکھر کو اس شرط پر ضمانت پر رہا کی ہے کہ وہ نہ تو دہلی سے باہر جائے گا اور نہ مقدمہ کے گواہوں پر اثرانداز ہونے کیلئے ان سے ربط پیدا کرے گا۔ کانگریس قائد سجن کمار کو اس شرط پر فسادات مقدمہ میں تحت کی عدالت کی جانب سے رہا کیا گیا تھا لیکن کھوکھر کو دیگر 4 افراد کے ساتھ مجرم قرار دیا گیا تھا۔ بنچ نے کھوکھر کو راحت رسانی کی بشرطیکہ وہ 25 ہزار روپئے کا شخصی مچلکہ ایک ضمانت کے ساتھ جو اسی رقم کی ہو، عدالت میں داخل کرے۔ عدالت نے تاہم مزید طبی علاج کی درخواست مسترد کردی جو مختلف بیماریوں کے سلسلہ میں تھی۔ جن کی بنیاد پر اس نے ضمانت پر رہائی کی درخواست کی تھی۔ بنچ نے کہا کہ انہیں طبی بنیادوں پر رہا کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے کیونکہ جیل کے عہدیدار ان کی طبی ضروریات کی تکمیل کررہے ہیں۔ سی بی آ ئی نے ان کی درخواست کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا کہ شکایت کنندہ ان کے رشتہ داروں کے ساتھ ماضی میں ربط پیدا کرتے ہوئے گواہوں پر دباؤ ڈال چکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT