Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / سکھ ولیج کے قدیم میدان کو کچرے کی نکاسی کا مقام بنانے کا فیصلہ

سکھ ولیج کے قدیم میدان کو کچرے کی نکاسی کا مقام بنانے کا فیصلہ

صحت پر مضر اثرات کے خدشات سے مقامی عوام میں بے چینی، فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ
حیدرآباد۔26 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت کی جانب سے ایک جانب ’’سوچھ بھارت‘‘ مہم کے تحت عوامی علاقوں میں صحت کے معیار کو بلند کرنے کی بظاہر کوشش کی جارہی ہے لیکن حقیقت میں کئی مقامات پر ایسے مناظر موجود ہیں جوکہ عوام کی صحت کے لئے خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں۔ اس کی ایک اہم مثال نئے شہر کے مصروف ترین علاقے سکھ ولیج میں قدیم ہاکی میدان جو کہ تقریباً 50 ایکڑ اراضی پر موجود ہے اسے اب کچرے کی نکاسی کے لئے استعمال کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کی وجہ سے مقامی عوام میں سخت ناراضگی اور مایوسی پائی جاتی ہے۔ روزنامہ سیاست سے اس فیصلے کے خلاف میں کی جانے والی کوششوں کا تذکرہ کرتے ہوئے راجیش کمار، مہندر، راجن پال اور دیگر ساتھیوں پر مشتمل ایک وفد نے کہا کہ سکھ ولیج کا یہ میدان تقریباً کئی برسوں سے عوام کے لئے کرکٹ، فٹ بال، والی بال کھیلنے کی سہولیات فراہم کرنے کے علاوہ عام عوام جس میں معمر افراد، سبکدوش ملازمین، خواتین اور بچوں کے لئے کھیل و تفریح کے علاوہ صبح کے اوقات میں چہل قدمی ، یوگا اور دیگر مصروفیات کے لئے استعمال ہوتا ہے لیکن اب انتظامیہ کی جانب سے اسے کچرے کی نکاسی کے لئے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے بعد یہ کھلا میدان جو کھیلوں کے لئے استعمال ہوتا تھا وہ کچرے کے انبار میں تبدیل ہوجائے گا جس سے صحت پر مضر اثرات پڑنے کے خدشات ہیں۔ وفد نے مزید کہا کہ شہر میں پہلے ہی ڈینگی کے مرض سے عوام پریشان ہیں تو انتظامیہ کا یہ فیصلہ میدان کے اطراف کے محلہ جات مہاراجہ کالونی، ایم ای ایس کوارٹرس، مڈفورڈ اپارٹمنٹ، سکھ ولیج پی اینڈ ٹی کالونی، چندولال بائولی کے عوام کے لئے صحت کو خراب کرنے کی قبرستان میں تبدیل ہوجائے گا۔ دھوبی گھاٹ کے نام سے مشہور اس میدان کی ایک سمت اسکول، مسجد اور مندر موجود ہے تو دوسری سمت پیراڈائس سے حشمت پیٹ کو ملانے والی اہم سڑک گزرتی ہے جس پر مستانہ ہوٹل کے علاوہ طویل قطار میں دکانیں بھی موجود ہیں اور یہاں کے تمام افراد نے اس فیصلے کو انتہائی بچکانہ فیصلہ قرار دیتے ہوئے ارباب مجاز سے مطالبہ کیا ہے کہ کھیلوں کے علاوہ تہوار کے موقع پر استعمال کی جانے والی اس کھلی اراضی کو کچرے کی نکاسی میں تبدیل کرنے کے فیصلے کو واپس لیا جائے تاکہ ایک جانب عوام کی صحت کو مضر اثرات سے محفوظ رکھا جائے تو دوسری جانب کھیل کے لئے مختص اس میدان کو جسمانی ورزش اور دیگر سرگرمیوں کے لئے ہی رکھا جائے۔

TOPPOPULARRECENT