Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / سکیولر ازم کو مستحکم کرنے والی ہر آوازکو ختم کرنے کی کوششیں عروج پر

سکیولر ازم کو مستحکم کرنے والی ہر آوازکو ختم کرنے کی کوششیں عروج پر

کمیونسٹ جماعتوں کا سہ روزہ احتجاجی پروگرام ۔ پوسٹر کی رسم اجرائی ۔ وینکٹ ریڈی اور ویرا بھدرم کا اظہار خیال
حیدرآباد۔23فبروری(سیاست نیوز) ملک کے بگڑتی حالات اور سکیولر زم کو بڑھتے خطرات کے پیش نظر بائیں بازو جماعتوں کی جانب سے قومی سطح پر تین روزہ احتجاجی پروگرام کا اعلان کیا گیا اس ضمن میںتلنگانہ اسٹیٹ سی پی ائی ‘ سی پی ائی ایم او ردیگر بائیں بازو تنظیموں ‘ سیاسی جماعتوں او رسیول سوسائٹی کی مشترکہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی تشکیل عمل میںآئی جس کے تحت 23فبروری تا 25فبروری علاقائی اور ضلعی سطح پر احتجاجی پروگرامس منعقد کئے جائیں گے ۔ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے پارٹی ہیڈکوارٹر مخدوم بھون میں معلنہ احتجاجی پروگراموں کے متعلق23فبروری کو پوسٹرس کی بھی اجرائی عمل میںلائی گئی۔ بعد ازاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سی پی آئی تلنگانہ اسٹیٹ سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہاکہ مرکزی میںبی جے پی حکومت کے اقتدار میں آتے ہی ملک کے مختلف حصوں میںمنظم طریقے سے مسلمانو ںکو نشانہ بنانے کا سلسلہ شروع ہوا جس کی شدت کے ساتھ مخالفت کے بعد اس پر کچھ حد تک کنٹرول ہوا مگر مخالفت کرنے والی بائیںبازو جماعتیں اور طلبہ تنظیمیں فرقہ پرستوں کا اگلا نشانہ بنے ۔ چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہا کہ بائیںبازو اثرو الی قومی یونیورسٹیز کو نشانہ بناتے ہوئے فرقہ پرست طاقتیں راست ہمارے بچوں کونشانہ بنانے کاکام کررہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ گجندر چوہان ‘ سبرامنیم سوامی جیسے فرقہ پرستوں کے ذریعہ قومی یونیورسٹیز کے ماحول کو فرقہ پرستی کا مرکز بنانے کی تمام کوششوں کو قومی یونیورسٹیزکے بائیںبازو جماعتوں سے جڑے طلبہ تنظیموں نے مکمل طور پر ناکام بنادیا ۔ وینکٹ ریڈی نے کہاکہ روہت ویمولہ کی خودکشی سے لیکر کنہیار کمار کی گرفتاری تک کے تمام حالات اور واقعات اس بات کی گواہی دیتے ہیں کہ مرکزی حکومت کی نگرانی میں آر ایس ایس اوراے بی وی پی جیسی فرقہ پرست تنظیمیں قومی یونیورسٹیز کو اپنا نشانہ بناتے ہوئے ہندوستان کے سکیولرز م کو مستحکم بنانے والی تمام آوازوں کو ختم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔سی پی ایم اسٹیٹ سکریٹری ویرا بھدرم نے میڈیا کو بتایا کہ جے این یو ہندوستان کا ایک باوقار تعلیمی ادارہ ہیں جہاں سے تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ آج اس ملک کا مقدر بنے ہوئے ہیںاور ایسے عظیم تعلیمی ادارے کے طلبہ پرملک سے غداری کا الزام عائد کرنا فرقہ پرست طاقتوں کی گھنوانی سازش کا حصہ ہے۔انہوں نے کہاکہ بائیںبازو جماعتوں کے قائدین ہو یا پھر بائیںبازو طلبہ تنظیموں کے قائدین اور کارکنان ہوں کسی کو بھی آر ایس ایس‘ بی جے پی یا پھر اے بی وی پی سے حب الوطنی کا سرٹیفکیٹ لینے کی ضرورت نہیںہے ۔انہوں نے کہاکہ روہت ویمولہ کی خودکشی اور کنہیار کمار کی گرفتاری کے پس پردہ اصل ذمہ داران کو عوام کے سامنے لانے اور خاطیوں کو کیفرکردار تک پہونچانے بائیںبازو جماعتیں ہر محاذ پر احتجاج منظم کرینگی ۔ انہوں نے تلنگانہ میںعلاقائی وضلعی سطح پر بائیںبازو جماعتوں کے احتجاجی پروگرامو ںسے جڑ کر روہت کے افرا دخاندان کو انصاف او رکنہیار کمارکی غیر مشروط رہائی کو یقینی بنانے کی عوام سے اپیل کی ۔ انہوں نے کمیونسٹ جماعتوں کے علاقائی اورضلعی قائدین سے معلنہ تین روزہ احتجاجی پروگراموں میںبڑھ چڑھ کاحصہ لینے اور احتجاج کو کامیاب بنانے کی بھی اپیل کی ہے۔ ڈاکٹر سدھاکر ‘ جانکی رام‘ جھانسی ‘ کرن اور دیگر بھی موجو دتھے۔

TOPPOPULARRECENT