Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / سیاست کی فلاحی سرگرمیاں ملک کے دیگر ذرائع ابلاغ کیلئے چیلنج : ڈگ وجئے سنگھ

سیاست کی فلاحی سرگرمیاں ملک کے دیگر ذرائع ابلاغ کیلئے چیلنج : ڈگ وجئے سنگھ

مسلم تحفظات اور دیگر اُمور پر ظہیرالدین علی خان اور عامر علی خان سے تبادلہ خیال

حیدرآباد 20 اکٹوبر (سیاست نیوز) ادارہ سیاست کی فلاحی سرگرمیاں ملک کے دیگر ذرائع ابلاغ اداروں کے لئے ایک چیلنج ہے۔ اخبار سیاست کی جانب سے چلائی جانے والی فلاحی سرگرمیاں ملک میں آج کی اہم ترین ضرورت ہے۔ سینئر کانگریسی قائد و جنرل سکریٹری آل انڈیا کانگریس کمیٹی مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے آج روزنامہ سیاست کے دورہ کے دوران اِن خیالات کا اظہار کیا۔ اُنھوں نے اِس موقع پر منیجنگ ایڈیٹر سیاست جناب ظہیرالدین علی خاں، نیوز ایڈیٹر سیاست جناب عامر علی خاں کے علاوہ دیگر شعبہ جات کے ذمہ داران سے ملاقات کی۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ کے ہمراہ اِس موقع پر صدر پردیش کانگریس مسٹر اتم کمار ریڈی، قائد اپوزیشن قانون ساز کونسل جناب محمد علی شبیر، مسٹر مدھو گوڑ یشکی، جناب محمد فاروق حسین، مسٹر ایم بٹی وکرامارک، مسٹر پونم پربھاکر، مسٹر مہیشور ریڈی ، مسٹر ناگیا کے علاوہ دیگر قائدین موجود تھے۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے دکن ریڈیو کے توسط سے ادارہ سیاست کی جانب سے ملت اسلامیہ کی فلاح و بہبود کے لئے چلائے جانے والے پروگرامس کا معائنہ کرنے کے بعد ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ ملک کے موجودہ حالات میں ادارہ سیاست کی جانب سے انجام دی جانے والی سرگرمیاں وقت کی اہم ضرورت ہے اور جب ایک اخبار اتنی سرگرمیاں چلا سکتا ہے تو یہ دیگر ذرائع ابلاغ اداروں کے لئے ایک چیلنج ہے۔ اُنھوں نے نیک توقعات کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ وہ دعاگو ہیں کہ یہاں اِسی طرح خوشحالی، فرقہ وارانہ ہم آہنگی برقرار رہے۔ اُنھوں نے روزنامہ سیاست کی جانب سے چلائی جانے والی ہیلپ لائن کے ذریعہ سرکاری اسکیمات کے متعلق شعور بیداری و رہبری کی سراہنا کرتے ہوئے کہاکہ ملک کی دیگر ریاستوں میں بھی کئی اسکیمات موجود ہیں لیکن بجٹ میں موجود رقومات کا خرچ بھی دشوارکن مرحلہ ہوتا ہے لیکن یہاں پر یہ جان کر خوشی ہوئی کہ اسکیمات کے متعلق سیاست کی جانب سے شعور بیداری و رہبری کے سبب مختص کردہ بجٹ سے زائد استفادہ کنندگان حکومت سے رجوع ہونے لگے ہیں۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے اِس موقع پر موجود قائدین سے سابقہ حکومت اور موجودہ حکومت کی کارکردگی کے متعلق دریافت کیا۔ اُنھوں نے بتایا کہ ملک کی مختلف ریاستوں میں اس طرح کی سرگرمیوں کے آغاز کی ضرورت ہے۔ اُنھوں نے ادارہ سیاست کی جانب سے مختلف انجینئرنگ کالجس میں بہار، مغربی بنگال، اترپردیش، آسام، جھارکھنڈ و دیگر ریاستوں کے طلبہ کو داخلے دلوائے جانے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ کیا واقعی ایسا ممکن ہوسکتا ہے۔ جناب ظہیرالدین علی خان نے اے آئی سی سی قائد کو سیاست کی سرگرمیوں سے واقف کرواتے ہوئے کہاکہ ادارہ سیاست نہ صرف ملت اسلامیہ کی تعلیمی ترقی پر توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے بلکہ معاشرتی مسائل کے حل کے لئے بھی ادارہ سیاست کی جانب سے مرکز قائم کیا گیا ہے جہاں نکاح کو آسان بنانے کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔  اُنھوں نے ادارہ سیاست کی جانب سے تربیت حاصل کرنے والے 935 نوجوانوں کا محکمہ پولیس میں ہوئے انتخاب کی تفصیلات سے بھی واقف کروایا۔ اِسی طرح سیاست کی جانب سے نوجوانوں کی رہبری اور ملازمتوں میں اپنے حق کے حصول کے لئے کوششوں کا تذکرہ کرتے ہوئے جناب ظہیرالدین علی خاں نے بتایا کہ ریاست میں مسلم نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی کے لئے رہبری کی اشد ضرورت محسوس ہورہی ہے جسے پورا کرنے کے لئے ایک ہیلپ لائن شروع کی گئی ہے۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کہاکہ ریاست تلنگانہ میں اِس طرح کی سرگرمیاں کافی سود مند ثابت ہونے کی قوی توقع ہے۔ اِس موقع پر اُنھوں نے ہیلپ لائن میں رہبری کے حصول کے لئے پہونچنے والے نوجوانوں سے گفتگو کی اور اُن کے مستقبل کے منصوبوں کے متعلق دریافت کیا۔ اِس موقع پر بیرونی ممالک میں تعلیم کے حصول کے لئے اسکالرشپ کی درخواست داخل کرنے والے نوجوانوں نے اُنھیں درپیش مشکلات سے واقف کروایا۔ اِسی طرح اسکالرشپ ہیلپ لائن میں موجود دیگر نوجوانوں نے بھی ریاستی حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی اسکالرشپس کے لئے سیاست کی رہبری سے ہونے والی آسانیوں کی ستائش کی۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے سیاست کے ردّی کے ذریعہ آمدنی اور اُس آمدنی کے غریبوں کی فلاح و بہبود کیلئے استعمال کی بھی ستائش کی۔ اُنھوں نے کیلی گرافی شعبہ کا بھی معائنہ کیا اور اِس مفقود ہورہے فن کے احیاء کے سلسلہ میں ادارہ سیاست کی کاوشوں کی ستائش کی۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ کے دورہ سیاست کے موقع پر کانگریس کے اقلیتی قائدین جناب محمد فخرالدین صدر پردیش کانگریس اقلیتی سیل، جناب عظمت اللہ حسینی، جناب عبداللہ سہیل، جناب خواجہ ذاکرالدین، جناب معراج خان ، خواجہ غیاث الدین، اعجاز خان ، فاروق پاشاہ قادری کے علاوہ صدر تلنگانہ یوتھ کانگریسمسٹر انیل کمار یادو ، مسٹر کوشک اور دیگر موجود تھے۔ جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے تمام قائدین کا خیرمقدم کیا۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ اِس موقع پر ذمہ داران سیاست کے ہمراہ گفتگو کے دوران مسلم تحفظات اور دیگر اہم موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔ ریاست تلنگانہ میں 12 فیصد مسلم تحفظات کے سلسلہ میں جاری جدوجہد اور عوامی ردعمل کے علاوہ سابقہ حکومت کی جانب سے فراہم کردہ 4 فیصد مسلم تحفظات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT