Wednesday , May 24 2017
Home / اضلاع کی خبریں / سیاسی میدان میں بھی مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے کا مطالبہ

سیاسی میدان میں بھی مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے کا مطالبہ

محبوب نگر۔15 مارچ ( پریس نوٹ ) جناب بابر شیخ  نے بی سی کمیشن کے رکن مستقر پر ملاقات کر کے میمورنڈم پیش کرتے ہوئے کہاکہ تلنگانہ میں مسلمانوں کو تحفظات کے مسئلہ کا جائزہ لینے تشکیل دی گئی ۔ سدھیر کمیشن نے اپنی رپورٹ حکومت کو پیش کردی ہے ۔ لہذا ہماری کمیشن سے خواہش ہے کہ وہ خاص طور پر سیاسی میدان میں مسلمانوں کو تحفظات کیلئے سفارش کریں تاکہ مستقبل میں مسلمان لیڈرشپ ایوانوں میں اپنے طبقہ کی صحیح طور پر اپنے مسائل کو حل کرواسکیں ۔ دورحاضر میں ملک کے تمام ریاستوں کے ایوانوں میں ہماری قیادت نہیں کے برابر ہے ‘ ملک کی آزادی کے بعد سے مسلمانان ہند کیلئے مولانا آماد کے عد کوئی دوسرا ثانی قومی سطح کا قائد تیار نہیں ہوسکا ۔ ناصر بن احمد باہیال بابر شیخ فاؤنڈر و کنوینر انجمن اتحاد ملت ( ریاست تلنگانہ) نے کہا کہ سدھیر کمیشن نے جو سفارشات پیش کی ہیں وہ مسلمانوں کی حالت کو بہتر بنانے کیلئے انتہائی اہمیت کی حامل ہیں ۔ کمیشن نے یہ بھی واضح کردیا ہے کہ مسلمانوں میں 85 فیصد لوگ انتہائی پسماندہ ہیں ۔ سدھیر کمیشن نے جو سفارشات کی ہیں وہ ساری قابل عمل ہیں اور ان پر ریاستی حکومت کو پوری توجہ کے ساتھ کارروائی کرنے کی ضرورت ہے ‘ سب سے بنیادی پہلو تو تحفظات کی فراہمی ہے ‘ جب تک حکومت کی جانب سے عملی اقدامات کا آغاز نہیں ہوگا اس وقت تک مسلمانوں کی حالت میں سدھار یا بہتری کی امید نہیں کی جاسکتی ۔ صرف زبانی جمع خرچ یا دعوؤں سے حالات بدلنے والے نہیں ہیں ۔ 12فیصد تحفظات فراہم کرنے کیلئے ٹاملناڈو کے طریقہ کار کو اختیار کرنے کا جو مشورہ دیا ہے وہ قابل عمل ہے اور اس کو اختیار کرتے ہوئے تحفظات کی فراہمی کو یقینی بنایا جاسکتا ہے ۔ ہماری ریاست کے وزیر اعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ تحفظات فراہم کرنے کے عمل کو تیز کرنے پر زور دیں تو بہتر ہوگا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT