Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / سیاچن :برف میں دفن تمام 10 فوجیوں کی موت کی توثیق

سیاچن :برف میں دفن تمام 10 فوجیوں کی موت کی توثیق

زندہ بچانے کی تمام کوششیں ناکام ۔ قوم کیلئے جان قربان کرنے والے بہادر فوجیوں کو سلام ‘ وزیر اعظم نریندر مودی کا ٹوئیٹ
جموں 4 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) سیاچن میں برفانی طوفان کی زد میں آنے کے بعد برف میں دفن ہوجانے والے 10 فوجی اہلکار بشمول ایک آفیسر کے تعلق سے توثیق ہوگئی ہے کہ وہ فوت ہوگئے ہیں۔ ان سب کا تعلق مدراس ریجمنٹ سے ہے ۔ فوج اور انڈین ائر فورس کی جانب سے کل سے بہت کوشش کی کہ ان سپاہیوں کو اور ایک جونئیر کمیشنڈ آفیسر ( جے سی او ) کو بچایا جاسکے ۔ پاکستان سے ملنے والی لائین آف کنٹرول کے قریب ان تمام کا پوسٹ برفانی طوفان کی زد میں آگیا تھا اور وہ برف میں دفن ہوگئے تھے ۔ انتہائی عصری آلات سے لیس خصوصی مہارت رکھنے والی ٹیموں کو آج صبح لیہہ کو روانہ کیا گیا تھا ۔ انہیں بھی بو سونگھنے والے کتوں کے ساتھ حرکت میں لایا گیا تھا تاہم انہیں بچانے کی تمام تر کوششیں ناکام ثابت ہوئیں۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے ان تمام فوجیوں کی موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے اپنے ٹوئیٹ پر کہا کہ سیاچن میں سپاہیوں کی موت انتہائی افسوسناک ہے ۔ وہ ان بہادر سپاہیوں کو سلام کرتے ہیں جنہوں نے ملک کی خاطر اپنی جان دیدی ۔ لیفٹننٹ جنرل ڈی ایس ہوڈا فوجی کمانڈر ناردرن کمان نے اپنے ایک پیام میں کہا کہ یہ انتہائی افسوسناک واقعہ ہے اور ہم ان سپاہیوں کو سلام کرتے ہیں جنہوں نے ہماری سرحدات کا تحفظ کرتے ہوئے تمام تر چیلنجس کا سامنا کیا اور اپنا فرض ادا کرتے ہوئے عظیم قربانی پیش کردی ۔ شمالی کمان کے دفاعی ترجمان کرنل ایس ڈی گوسوامی نے قبل ازیں ایک بیان میں کہا تھا کہ بچاؤ ٹیمیوں انتہائی نامساعد موسم کا سامنا کرتے ہوئے وہاں زندہ بچ جانے والوں کا پتہ چلانے اور انہیں بچانے کی ہر ممکن کوشش کر رہی ہیں

تاہم یہ انتہائی افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ کسی کے بھی زندہ بچ جانے کے امکانات بہت ہی کم ہیں۔ کہا گیا ہے کہ برف سے ڈھکے اس علاقہ میں درجہ حرارت دن کے اوقات میں منفی 25 اور رات کے اوقات میں منفی 42 درج کیا جا رہا ہے ۔ یہ فوجی چوکی سطح زمین سے 19,600 فیٹ کی بلندی پر واقع تھی ۔ دفاعی ترجمان نے کہا کہ آج دن بھر بھی ان فوجیوں کا پتہ چلانے اور انہیں بچانے کی ہر ممکن کوشش کی گئی لیکن دن سے ہی ان کے زندہ بچ جانے کے آثار انتہائی کم محسوس کئے جا رہے تھے ۔ گورنر جموںو کشمیر این این ووہرہ نے ناردرن کمان کے کمانڈر جنرل ہوڈا سے فون پر بات چیت کی اور ان سے ان فوجیوں کی موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ۔ گورنر نے غمزدہ افراد خاندان سے بھی اظہار تعزیت کیا ۔ پاکستان نے بھی ان فوجیوں کا پتہ چلانے اور انہیں بچانے کی کوششوں میں مدد کی پیشکش کی تھی تاہم اسے مسترد کردیا گیا ۔

ڈائرکٹر جنرل ملٹری آپریشنس لیفٹننٹ جنرل رنبیر سنگھ نے اپنے پاکستانی ہم منصب عہدیدار کی مدد کی پیشکش کو مسترد کردیا اور کہا کہ انہیں بچانے کی ہر ممکن کوششیں پہلے ہی کی جا رہی ہیں۔ دہلی میں فوجی ذرائع نے کہا تھا کہ پاکستان کے ڈائرکٹر جنرل ملٹری آپریشنس میجر جنرل امیر ریاض نے لیفٹننٹ جنرل سنگھ کو فون کرتے ہوئے مدد کی پیشکش کی تھی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ جب کبھی کوئی حادثہ سرحدات کے قریب ہوتا ہے ایسی پیشکش معمول کی بات ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پاکستان کی پیشکش پر شکریہ ادا کیا ہے تاہم چونکہ ہم پہلے ہی سے ہر ممکن کوششیں کر رہے ہیں اس لئے ہمیں مزید کسی مدد کی ضرورت نہیں ہے ۔ پاکستان نے یہ پیشکش برفانی طوفان میں فوجیوں کے پھنس جانے کے 30 گھنٹے بعد کی تھی ۔ کرنل گوسوامی نے کہا تھا کہ برف کے بڑے بڑے بلاکس اس مقام پر گر گئے تھے جس کی وجہ سے یہ لوگ دفن ہوگئے ۔ برف کے یہ تودے صاف کرنا انتہائی مشکل کام ہے ۔ انہوں نے بتایا تھا کہ کل کی کوششوں کے بعد آج بچاؤ کاموں کیلئے ایک بڑی ٹیم کو متعین کیا گیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT