Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / سیتارام باغ آتشزدگی‘ تحقیقات کیلئے کمیٹی کا قیام

سیتارام باغ آتشزدگی‘ تحقیقات کیلئے کمیٹی کا قیام

حیدرآباد۔18اپریل ( سیاست نیوز) شہر کے علاقہ سیتارام باغ میں پیش آئے آتشزدگی کے خوفناک واقعہ پر کمشنر بلدیہ نے اپنے سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ اس حادثہ کی تحقیقات کیلئے سہ رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ۔ ایڈیشنل کمشنر اور ایڈیشنل کمشنر آئی ٹی پر مشتمل کمیٹی کی حقائق کا پتہ چلانے کی ذمہ داری دی گئی ہے ۔ ساتھ ہی انہوں نے اس عمارت کے مالک پر دیوانی اور فوجداری مقدمہ درج کیا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2014 میں G+1 کی اجازت حاصل کی گئی تھی اور بعد میں عدالت سے انجکشن آرڈر حاصل کرتے ہوئے پانچ منزلہ عمارت تعمیر کی گئی ۔ انہوں نے شہر می ںایسے حادثات کے پیش نظر مالکین کو مشورہ دیا کہ وہ فوری آتش فرو آلات اور محکمہ سے اجازت حاصل کرلیں ۔ انہوں نے بتایا کہ شہر میں 3,869 عمارت کو چاہیئے کہ وہ فوری احتیاطی اقدامات کرلیں ۔ تاہم اس خصوص میں فارم 12کے تحت نوٹس بھی جاری کی گئی تھی ۔ تاہم 3448 عمارتوں کے مالکین جنہوں نے بلدیہ کی نوٹس کو نظرانداز کیا تھا انہیں قطعی نوٹس بھی جاری کردی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ان میں 20 عمارتوں کے خلاف کارروائی کی اسٹیٹ فائر سرویس ڈائرکٹر سے خواہش کی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2005ء تعمیر شرائط سے متعلق آتش فرو آلات کی تنصیب کرنے کیلئے 1,497 اسکولس ‘ کالجس ‘ 350 ہاسپٹلس ‘ 258 فنکشن ہال ‘ 88ہوٹلس ‘50بارس اور تجارتی ادارے ‘ 129سینما تھیٹرس ‘2ہاسٹلس کو نوٹس جاری کی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ٹاؤن پلاننگ سے متعلق مقدمات کی یکسوئی غیر مجاز تعمارات پر خصوصی ٹریبونل کے قیام کی کوشش جاری ہیں ۔ کمشنر بلدیہ ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ خصوصی ٹریبونل کی مدد سے ٹاؤن پلاننگ سے متعلق کئی مقدمات حل ہوجائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT