Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / سیلاب سے بہار اور گجرات میں 27 افراد ہلاک

سیلاب سے بہار اور گجرات میں 27 افراد ہلاک

آسام میں معمولی بہتری، اتراکھنڈ میں بارش، گوا میں بارش سے معمولات زندگی مفلوج

نئی دہلی ۔ 2 اگست (سیاست ڈاٹ کام) بہار میں آج سیلاب کی صورتحال مزید ابتر ہوگئی جبکہ 22 تازہ ہلاکتوں کی اطلاع ملی۔ گجرات میں پانچ افراد ہلاک ہوگئے جبکہ آسام میں سیلاب کی صورتحال میں معمولی بہتری پیدا ہوئی۔ بہار میں جہاں سیلاب  سے 29 لاکھ افراد 12 اضلاع میں متاثر ہوئے اور 60 افراد تاحال ہلاک ہوگئے۔ نیپال کے ترائی کے علاقہ میں زبردست بارش کی وجہ سے دریائے گنگا میں پانی سطح آب میں اضافہ ہوگیا اور ضلع بھاگلپور کے قصبہ کہل گاؤں میں یہ خطرہ کے نشان کے اوپر بہنے لگی۔ متاثرہ علاقوں میں جملہ 460 راحت رسانی کیمپس قائم کئے گئے ہیں جہاں 377097 افراد پناہ گزین ہیں۔ گجرات میں رات بھر زبردست بارش ریاست کے جنوبی اور مشرقی وسطی علاقوں میں ہونے کی وجہ سے سیلاب جیسی صورتحال پیدا ہوگئی۔ دریاؤں کے کنارے بسے ہوئے محلوں میں سیلاب آ گیا۔ تین افراد بھکرا واڑہ اور دو افراد بدیلی کے قریب دریائے اورسانگ میں غرق ہوکر ہلاک ہوگئے۔ دریں اثناء آسام میں سیلاب کی صورتحال میں معمولی سی بہتری پیدا ہوئی۔ تاہم 10 لاکھ افراد اب بھی متاثر ہیں۔ ریاستی عہدیداروں کے بموجب 11 لاکھ افراد کل تک 21 اضلاع میں متاثر ہوئے تھے جبکہ 34 افراد کی جانیں ضائع ہوئی تھی۔ کازی رنگا نیشنل پارک کے ڈیویژنل فاریسٹ آفیسر نے کہا کہ 310 جانور بشمول 221 ہاگ کرن اور 21 ایک سینگھ والے گینڈے سیلاب کی وجہ سے ہلاک ہوگئے۔ ایک نر رائل بنگال ٹائیگر کا ڈھانچہ زیرآب کازی رنگا نیشنل پارک سے دستیاب ہوا۔ نئی دہلی میں 14.3 ملی میٹر بارش 8:30 بجے صبح تک ہوچکی تھی۔ تاہم اس کے بعد بارش نہیں ہوئی حالانکہ زبردست حبس کی وجہ سے عوام پریشان ہیں۔ محکمہ موسمیات کے بموجب 35.2 درجہ سلسیس درجہ حرارت تھا جبکہ رطوبت کی سطح 63 سے زیادہ ہوکر 95 فیصد ہوگئی۔ مہاراشٹرا کے اضلاع تھانے، پال گھر اور ناسک کے تقریباً 100 دیہات زبردست بارش کے اندیشے کے تحت چوکس کردیئے گئے ہیں۔

ان اضلاع کے 78 دیہاتوں میں چوکسی کا اعلان کردیا گیا ہے جبکہ ممبئی کو پانی سربراہ کرنے والے ذخائر آب مودک ساگر اور تنسا لبریز ہوگئے کیونکہ بارش مسلسل ہونے کی وجہ سے پانی کی آمد جاری ہے۔ ناسک میں مسلسل تیسرے دن بھی موسلادھار بارش سے معمولات زندگی درہم برہم ہوگئے۔ سرکاری عہدیداروں کے بموجب 35928 کیوسکس پانی پال کھیڑ تالاب سے دریائے کڑوا میں خارج کیا گیا جس کے نتیجہ میں گوداوری، درنا اور کڑوا میں طغیانی آ گئی۔ انتظامیہ نے گوداوری کے کنارے رہنے والوں کو محفوظ مقامات منتقل ہونے کی ہدایت دی۔ گوا میں مسلسل بارش سے معمولات زندگی معطل ہوگئے۔ عہدیداروں نے انجونم تالاب سے پانی خارج کیا۔ دریائے کسٹی کے کنارے رہنے والوں کو چوکسی کی ہدایت دی گئی ہے۔ ہماچل پردیش میں بارش سے متعلق واقعات میں 22 انسانی جانیں ضائع ہوئیں۔ دھرمشالہ میں 208 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ 150 مقامات پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آئے۔ 100 سڑکیں بند کردی گئی تھیں جن میں سے بیشتر کو مرمت کے بعد دوبارہ کھول دیا گیا۔ اتراکھنڈ میں بھی زبردست بارش جاری ہے جبکہ یو پی کے دیہات بلیا میں بجلی گرنے سے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔ اتراکھنڈ میں تین افراد ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا۔

TOPPOPULARRECENT