Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / سیلاب سے بہار میں مزید 39 ہلاک، یوپی ابتر

سیلاب سے بہار میں مزید 39 ہلاک، یوپی ابتر

پٹنہ ؍ لکھنؤ 25 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے سیلاب کی وجہ سے اموات کا سلسلہ جاری ہے۔ جبکہ آج مزید 39 اموات کی اطلاع ملی۔ یوپی میں تاہم صورتحال ابتر برقرار ہے۔ عہدیدار صورتحال کو بہتر بنانے کے لئے جدوجہد میں مصروف ہیں۔ تباہ کن سیلاب سے انسانی بستیوں میں مغربی بنگال میں 90 ہلاکتیں واقع ہوچکی ہیں جبکہ آسام میں تاحال 156 اور یوپی میں 72 اموات ہوئی ہیں۔ بہار میں جملہ ہلاکتوں کی تعداد 418 ہوگئی جبکہ ریاست کے 19 اضلاع کے ایک کروڑ 67 لاکھ افراد سیلاب سے متاثر ہیں۔ تاہم بعض مقامات پر سیلاب کا پانی اُترنا شروع ہوگیا ہے جس کی وجہ سے متاثرہ افراد اپنے گھروں کو واپس ہورہے ہیں۔ پناہ گزین کیمپوں کی تعداد قبل ازیں 624 تھی جو اب 368 رہ گئی ہے۔ یوپی کے تین ہزار دیہاتوں کے 24 لاکھ افراد جن کا تعلق 25 اضلاع سے ہے متاثر ہیں۔ 57 ہزار افراد راحت رساں کیمپوں میں مقیم ہیں۔ مشرقی یوپی اور ترائی کے علاقوں میں کئی دریائیں خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہی ہیں۔ شمالی بنگال میں متاثرہ اضلاع جلپائی گوڑی، کوچھ بہار، علی پور دوار، شمالی دیناج پور، جنوبی دیناج پور اور مالدہ متاثر ہیں۔ روزانہ صورتحال میں بہتری آرہی ہے کیونکہ موسلا دھار بارش کا سلسلہ ختم ہوچکا ہے۔ تاہم ایک سرکاری عہدیدار نے کہاکہ ضلع مالدہ میں سیلاب کے جمع ہوجانے والے پانی سے نجات پانے میں مشکل پیش آرہی ہے۔ متاثرہ زیرآب آنے والوں علاقوں کے تقریباً 6 اضلاع کے 59 لاکھ افراد اور تقریباً 6 لاکھ ہیکٹر اراضی پر کھڑی فصلوں کو نقصان پہنچا ہے۔ آسام میں صورتحال قابل لحاظ حد تک بہتر ہوئی ہے۔ دریائے برہمپترا اور اس کی معاون ندیاں اب خطرے کے نشان سے نیچے بہہ رہی ہیں۔ تاہم ریاست میں 7 اضلاع اب بھی زیرآب ہیں۔ 472 دیہاتوں کے 2 لاکھ 67 ہزار افراد بقا کی جدوجہد میں مصروف ہیں۔ آسام کے ریاستی آفات سماوی انتظامیہ اتھاریٹی کی خبر کے بموجب تقریباً 36 ہزار ہیکٹر اراضی زیرآب آگئی ہے۔ دریائے دھنسری خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہی ہے۔ 25,253 افراد اب بھی 62 راحت رسانی کیمپوں میں لکھم پور، موری گاؤں، چرنگ اور ناگاؤں اضلاع میں مقیم ہیں۔ اطلاعات کے بموجب جورہاڈ ضلع میں سڑکیں موری گاؤں میں ایک پُل اور ڈبرو گڑھ میں ایک اسکول کو نقصان پہنچا ہے۔ تباہ کن سیلاب کی تیسری لہر سے اب تک آسام میں جملہ 72 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ جملہ 156 افراد جاریہ سال سیلاب سے متعلق حادثات میں ہلاک ہوگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT