Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / سیکولرزم کے نام پر اقلیتوں کو چھوٹ اور ہندو نشانہ

سیکولرزم کے نام پر اقلیتوں کو چھوٹ اور ہندو نشانہ

مودی حکومت پر وی ایچ پی کی تنقید ‘ مسلمانوں کی آبادی میں اضافہ پر تشویش
حیدرآباد۔16اگست(سیاست نیوز) تلنگانہ وشواہندو پریشدکے ریاستی صدر رام راجو نے سیاسی جماعتوں پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ انتخابات کے دوران ہر ہندوووٹرکی اہمیت ہوتی ہے مگر اقتدارحاصل کرنے کے بعد یہی سیاسی جماعتیں سکیولرزم کے نام پر ہندوئوں کے حقوق پامال کرتے ہیں۔ کیشو میموریل ایجوکیشنل انسٹیٹوٹ نارائن گوڑہ میں سنکلپ بھارت دیوس کے عنوان پر منعقدہ اجلاس سے خطاب کے دوران رام راجو نے مدرسوں کو بھی اپنی تنقید کا نشانہ بنایا او رکہاکہ مدرسوں میں جہاد کی تعلیم دی جاتی ہے مگر حکومتیں مدرسوں پر سختی برتنے سے قاصر ہیں۔انہو ںنے مزیدکہاکہ ریاست میں سکیولرزم کے نام پر ہندئووں کے حقوق کو سلب کیاجارہا ہے جبکہ سیکولرزم کے نام پر دھشت گردوں کو پناہ دی جارہی ہے ۔ انہوں نے مزیدکہاکہ بنگلہ دیش اور دیگر پڑوسی ممالک سے مسلم عورتیں ہندوستان میںداخل ہورہی ہیں اور ان کا ٹھکانہ حیدرآباد بن رہا ہے جہاں پر ان کی مقامی مسلمانوں سے شادیاں بھی ہورہی ہیں اور وہ درجنوں بچے پیدا کررہے ہیں اسی طرح تلنگانہ میںمسلمانوں کی تیزی کے ساتھ آبادی بڑھ رہی ہے ۔ رام راجو نے کہاکہ بنگلہ دیشی زبان سے عدم واقفیت کے باوجود حیدرآباد کا مسلمان ان سے شادیاں کررہا ہے ۔قومی صدر وی ایچ پی راگھو ریڈی نے گائو رکشہ کے ضمن میںوزیر اعظم نریندر مودی کے بیان کی سختی کے ساتھ مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اقتدار میںانے سے قبل نریندر مودی کا گائو رکشہ کے متعلق رویہ علیحدہ تھا اور اقتدار حاصل کرنے کے بعد بلکل الگ دیکھائی دے رہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہندئووں کے جذبات کے ساتھ کسی بھی قسم کے کھلواڑ ریاستی اور مرکزی دونوں حکومتوں کو نقصاندہ ثابت ہوگا۔ انہوں نے زعفرانی تنظیموں وی ایچ پی ‘ بجرنگ دل ‘ آر ایس ایس کے اکھنڈ بھارت کے نظریہ کو فروغ دینے کے لئے ہندو نوجوانوں کو متحد ہوکر کام کرنے کا مشورہ دیا او رکہاکہ اکھنڈ بھارت ہمارا دیرینہ خواب ہے جس کی تکمیل ہمارے ہندونوجوانوں کی مستعدی سے ہی ممکن ہے ۔وی ایچ پی او ربجرنگ دل کے قومی اور علاقائی قائدین نے بھی اس اجلاس سے خطاب کیاجبکہ سینکڑوں کی تعداد میں کارکنوں نے اس اجلاس میںشرکت کی ۔

TOPPOPULARRECENT