Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / سیکولر ہندو سب سے زیادہ خطرے میں:غلام نبی آزاد

سیکولر ہندو سب سے زیادہ خطرے میں:غلام نبی آزاد

 

نئی دہلی17اگست (سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے آج کہا کہ ملک میں غیر اعلانیہ ایمرجنسی نافذ ہے اور ملک کا سیکولر ہندو سب سے زیادہ خطرے میں ہے ۔ آزاد نے ’مشترکہ وراثت بچاؤ‘کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیکولر ہندو سڑکوں پر جدوجہد کررہے ہیں اور آر ایس ایس ملک کو توڑنے کا کام کر رہا ہے ۔ لوگ سہمے ہوئے ہیں کہ کہیں آر ایس ایس کے لوگ ان کے گھروں کو نہ جلا دیں۔ بابائے قوم مہاتما گاندھی نے ملک کو جوڑ کر آزادی دلائی تھی جس کے تانے بانے کو ختم کیا جا رہا ہے ۔ سوال ہندو یا مسلمان کا نہیں ہے سوال مشترکہ وراثت کو بچانے کا ہے ۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے لوگوں نے ’ہندوستان چھوڑو‘ تحریک میں حصہ نہیں لیا تھا اور انگریزوں کی حمایت کی تھی آج یہی لوگ قوم پرست ہو گئے ہیں اور آزادی کی تحریک میں شامل ہوکر کلیدی کردار ادا کرنے والے لوگ ملک دشمن ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کی بات رکھنے والے میڈیا اداروں پر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی تلوار لٹک رہی ہے اور اس پر طرح طرح کے دباؤ بنائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ یہ کیسی جمہوریت ہے ؟ غلام نبی آزاد نے کہا کہ کانگریس کی حکومت میں لگائی گئی ایمرجنسی کی بحث بار بار کی جاتی ہے اور سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی نے اس کے لئے معافی بھی مانگ لی تھی ، لیکن آج جو صورت حال ہے وہ ایمرجنسی کے باپ جیسی ہے ۔انہوں نے کہا کہ نتیش کمار کے بی جے پی کے ساتھ جانے کے بعد جنتا دل یو کے سینئر لیڈر شرد یادو کو مرکز میں وزیر بننے کی لالچ دی گئی لیکن انہوں نے اصول کی لڑائی لڑی اور وزارت کی پیشکش کو ٹھکرا دیا۔ انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد متعدد لیڈروں نے جمہوری اصولوں کے لئے کرسی اور خاندان تک کو ترک کر دیا ، جبکہ آج ہر کوئی وزیر بننا چاہتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT