Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ سیاسی محرکات پر مبنی

سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ سیاسی محرکات پر مبنی

دادری قتل مقدمہ میں یوپی حکومت کا جوابی حلفنامہ، 4 مئی کو آئندہ سماعت
الہ آباد ۔ 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) حکومت اترپردیش نے آج الہ آباد ہائیکورٹ کو بتایا کہ دادری قتل مقدمہ میں تحقیقات بالکلیہ غیرجانبدار رہی ہیں۔ نوئیڈا کے بی جے پی لیڈر کی اس ضمن میں دائر کردہ درخواست سیاسی محرکات پر مبنی ہے۔ بی جے پی لیڈر اس مقدمہ میں ایک ملزم ہیں اور انہوں نے سی بی آئی تحقیقات کا حکم دینے کی خواہش کرتے ہوئے درخواست دائر کی ہے۔ ریاستی حکومت نے سنجیو سنگھ کی درخواست پر کل جوابی حلفنامہ داخل کرتے ہوئے غیرجانبدارانہ تحقیقات کا دعویٰ کیا ہے۔ درخواست گذار نے کہا کہ گذشتہ سال ستمبر میں محمد اخلاق کے گھر پر مبینہ بیف موجود ہونے کی افواہ کی بناء ہجوم کے حملہ واقعہ کی آزادانہ و غیرجانبدارانہ انداز میں تحقیقات نہیں کی گئی ہیں۔ درخواست گذار نے یہ معاملہ سی بی آئی کے سپرد کرنے کی بھی درخواست کی۔

اس نے کہا کہ محض بی جے پی سے تعلق ہونے کی بناء پولیس نے ریاست میں حکمراں سماج وادی پارٹی کی ایماء پر اسے مقدمہ میں غلط ماخوذ کیا ہے۔ تاہم حکومت نے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل عمران اللہ کے ذریعہ جوابی حلفنامہ داخل کرتے ہوئے کہا کہ درخواست گذار کا استدلال بالکلیہ غلط ہے۔ مقامی پولیس نے اخلاق کو زدوکوب کے ذریعہ موت کی نیند سلانے اور ان کے نوجوان لڑکے دانش کو بری طرح گھسیٹنے کے واقعہ کے بعد مؤثرانداز میں کارروائی کی ہے۔ ریاستی حکومت نے یہ بھی کہا کہ واقعہ کے بعد جن افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ان کی تعداد 30 سے زائد نہیں ہے۔ حکومت نے کہا کہ درخواست گذار نے سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ صرف سیاسی وجوہات کی بناء کیا ہے۔ جسٹس اجئے لانبا اور جسٹس رگھویندر کمار پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے اس معاملہ کی آئندہ سماعت 4 مئی کو مقرر کی ہے اور درخواست گذار کو تصحیح داخل کرنے کی اجازت دیدی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT