Wednesday , August 16 2017
Home / Top Stories / سی بی آئی کی نئی تشریح کانسپرنسی بیورو آف انوسٹی گیشن

سی بی آئی کی نئی تشریح کانسپرنسی بیورو آف انوسٹی گیشن

نوٹ بندی کی مخالفت پر ہراسانی ۔ صدرجمہوریہ سے ترنمول کانگریس کی شکایت

نئی دہلی، 11 جنوری (سیاست ڈاٹ کام)نوٹ بندي اور اپنے رہنماؤں کے خلاف کارروائی کی مخالفت میں گزشتہ تین دنوں سے دھرنا دے رہی ترنمول کانگریس نے آج صدر پرنب مکھرجی سے ملک میں ‘سوپر ایمرجنسی’ پر مداخلت کرنے کی درخواست کرتے ہوئے اپنے احتجاج کو ملک گیر کرنے کا اعلان کیا۔ترنمول کانگریس کے ممبران پارلیمنٹ نے آج یہاں راشٹرپتی بھون میں مسٹر مکھرجی سے ملاقات کر کے انہیں نوٹ بندی کی وجہ سے عام لوگوں کو ہو رہی بھاری مشکلات اور اس کی مخالفت کر رہے پارٹی لیڈران کو پریشان کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ایک میمورنڈم بھی پیش کیا۔پارٹی رہنما ڈیریک او برائن اور سوگت رائے نے مسٹر مکھرجی سے ملاقات کے بعد نامہ نگاروں سے کہا کہ انہوں نے صدر سے کہا کہ نوٹ بندي کے بعد سے ملک میں ‘سوپر ایمرجنسی’ کے حالات ہیں۔ نوٹ بندي کی مخالفت کرنے کی وجہ سے پارٹی رہنماؤں کو پریشان کیا جا رہا ہے لیکن وہ ‘گندی چال’سے ڈرنے والے نہیں ہیں اور مودی حکومت کی نوٹ بندي کی عوام مخالف کارروائی کے خلاف سیاسی جنگ لڑیں گے ۔مسٹر رائے نے کہا کہ نوٹ بندي کے سبب عوام بڑی مصیبت میں ہیں۔ ملک میں 25 کروڑ لوگوں کی روزی -روٹي چھن گئی ہے ۔ پیسے نکالنے کی پابندی کی وجہ سے صنعت و کاروبار بند ہوتے جا رہے ہیں لیکن بار بار کی درخواستوں کے باوجود حکومت کے رویے میں کوئی تبدیلی نہیں آ رہی ہے ۔

مودی حکومت پر حملہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مرکزی تفتیشی بیورو کو ‘کانسپریسي بیورو آف انویسٹی گیشن’بنا دیا گیا ہے ۔ نوٹ بندي کی مخالفت کرنے کی وجہ سے پارٹی رہنماؤں کو دھمکیاں دی جا رہیں اور ان کے خلاف کیس درج کیے جا رہے ہیں۔پارٹی لیڈر سندیپ بندھوپادھیائے کو ستایا جا رہا ہے ۔ حکومت کو چیلنج کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ ہمیں خوف زدہ نہیں کرسکتی ۔مسٹر رائے نے کہا کہ نوٹ بندی سے مغربی بنگال کے لوگ سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ بیرونی ریاستوں میں کام کرنے والے ریاست کے 80 لاکھ لوگوں کی روزی -روٹی چھن گئی اور دیڑھ کروڑ لوگوں کو نقصان ہوا ہے ۔انہوں نے کہا، “اب تریپورہ، آسام، جھارکھنڈ اور بہار سمیت نو ریاستوں میں ہماری تحریک جاری ہے ۔دہلی میں تین دن کا دھرنا آج ختم ہو گیا۔اس تحریک کو ہم ملک بھر میں لے جائیں گے ۔ تحریک کے اگلے مرحلے کا اعلان بعد میں کیا جائے گا. ” ممبر پارلیمنٹ نے بتایا کہ اس سے قبل بھی پارٹی قائدین نوٹ بندی کے معاملے پر صدرجمہوریہ سے دو مرتبہ ملاقات کرچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT