Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / سی پی آئی (ایم) کے رکن پارلیمنٹ کو دھمکی آمیز کالس

سی پی آئی (ایم) کے رکن پارلیمنٹ کو دھمکی آمیز کالس

تھرواننتاپورم ۔ 17 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی (ایم) کے رکن پارلیمنٹ ایم بی راجیش نے آج دعویٰ کیا کہ ملک سے غداری کے الزامات کے تحت گرفتار شدہ جے این یو اسٹوڈنٹس یونین کے صدر کنہیا کمار کی تائید کے اظہار پر انہیں گالی گلوج اور بدکلامی پر مبنی دھمکی آمیز کالس موصول ہورہے ہیں۔ راجیش نے فیس بک پر جاری کردہ اپنے پیغام میں کنہیا کمار کی گرفتاری پر بی جے پی اور سنگھ پریوار کی مذمت کی اور جموں و کشمیر میں پی ڈی پی ۔ بی جے پی اتحاد پر سوال اٹھایا۔ انہوں نے بی جے پی سے 10 سوالات کرتے ہوئے جواب طلب کیا ہے۔ راجیش نے کہا کہ کل آدھی رات کے بعد انہیں پہلا دھمکی آمیز کال موصول ہوا، جس میں مخاطب نے اپنا نام بیجو بتاتے ہوئے کہا کہ وہ ان سے کچھ اہم بات کرنا چاہتا ہے اور یہ جاننا چاہتا ہیکہ وہ (راجیش) آیا کس لئے ملک دشمن اور پاکستانی قوتوں کی حمایت کررہے ہیں۔ مارکسی رکن پارلیمنٹ نے کہا کہ انہوں نے اگرچہ بات چیت بند کرتے ہوئے اپنا موبائیل بھی سوئچ آف کردیا تھا جس کے باوجود اس شخص نے لینڈ لائن پر متعدد مرتبہ کال کیا۔ انہوں نے کہا کہ کال کرنے والے کی شناخت کرلی گئی ہے اور بہت جلد اس کے خلاف شکایت درج کروائی جائے گی۔

 

’’جہادیوںاور کمیونسٹوں میں ناپاک گٹھ جوڑ کا نتیجہ‘‘: وی ایچ پی
نئی دہلی ۔ 17 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) وشوا ہندو پریشد نے مبینہ غداری کی سرگرمیوں سے نمٹنے کیلئے حکومت کی سخت کارروائی کی ستائش کرتے ہوئے جے این یو تنازعہ کو جہادیوں اور بائیں بازو کے عناصر کے درمیان ناپاک گٹھ جوڑ کا نتیجہ قرار دیا۔ وی ایچ پی کے جوائنٹ جنرل سکریٹری سریندر جین نے کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کے دورہ جے این یو اور ’غداروں‘ کی حمایت کی مذمت کی اور کہا کہ مہاتما گاندھی کی قیادت میں ملک کی آزادی کیلئے لڑنے والی جماعت اب غداری میں ملوث افراد کیلئے جدوجہد کر رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT