Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / س2013 سے پٹرول کی قیمتوں میں 32 مرتبہ کمی 21 مرتبہ اضافہ

س2013 سے پٹرول کی قیمتوں میں 32 مرتبہ کمی 21 مرتبہ اضافہ

قیمتوں کو بین الاقوامی مارکٹ سے مربوط کردیا گیا ۔لوک سبھا میں وزیر تجارت کا بیان
نئی دہلی 9 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) ملک میں 2013 کے بعد سے پٹرول کی قیمتوں میں 32 مرتبہ کمی کی گئی اور 21 مرتبہ اضافہ کیا گیا ۔ اسی طرح ڈیزل کی قیمت میں 19 مرتبہ کمی کی گئی اور 28 مرتبہ اضافہ کیا گیا ۔ وزیر تجارت نرملا سیتارامن نے آج یہ بات بتائی ۔ انہوں نے وزیر پٹرویلم دھرمیندر پردھان کی جانب سے ایوان میں جواب دیتے ہوئے بتایا کہ حکومت نے ائر ٹربائین فیول ‘ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کو مختصر سے وقفہ کے ساتھ مارکٹ قیمتوں سے مربوط کردیا ہے ۔ انہوں نے وقفہ سوالات کے دوران بتایا کہ ان قیمتوں کو مارکٹ قیمتوں سے مربوط کردینے کے بعد سے عوامی شعبہ کی پٹرولیم کمپنیاں ان اشیا کی قیمتوں کے تعلق سے مناسب فیصلے کر رہی ہیں۔ یہ فیصلے بین الاقوامی اور دوسری مارکٹ حالات کے مطابق کئے جا رہے ہیں۔ وزیر موصوف نے کہا کہ یکم اپریل 2013 کے بعد سے پٹرول کی قیمتوں میں 32 مرتبہ کمی کی گئی تھی جبکہ 21 مرتبہ ان میں اضافہ کیا گیا ۔ ڈیزل کی قیمتوں میں 19 مرتبہ کمی کی گئی تھی اور 28 مرتبہ ان میں اضافہ کیا گیا ۔ سیتارمن نے کہا کہ پٹرولیم اشیا کی ریٹیل فروخت کی قیمت کو متعلقہ بین الاقوامی قیمتوں اور دوسرے عوامل سے مربوط کیا جا رہا ہے اور اس پر مناسب ٹیکسیس اور محاصل عائد کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ریٹیل فروخت قیمتوںک ے تعین میں جو دوسرے عامل ہیں جیسے اکسائز ڈیوٹی ‘ بی ایس آئی وی پریمیم ‘ مارکٹنگ اخراجات اور نفع وغیرہ کو بین الاقوامی قیمتوں سے غیر مربوط رکھا گیا ہے اور ان کے تناسب میں کوئی تبدیلی نہیں ہوتی ۔ انہوں نے بتایا کہ نومبر 2014 کے بعد سے اکسائز ڈیوٹی میں اضافہ کیا گیا ہے ۔ بیشتر ریاستی حکومتوں نے پٹرول اور ڈیزل پر ویاٹ میں بھی اضافہ کیا گیا ہے ۔ وزیر موصوفہ نے یہ ادعا کیا کہ بیشتر عوامل کو ذہن میں رکھنے کے بعد پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں بین الاقوامی مارکٹ میں جو کمی آئی ہے اس کا نفع صارفین تک پہونچا دیا گیا ہے ۔ نرملا سیتارامن نے بتایا کہ عوامی نظام تقسیم سے فروخت ہونے والے کیروسین اور سبسڈی والی پکوان گیس کی قیمتوں میں جون 2011 کے بعد سے اضافہ نہیں کیا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT