Thursday , June 22 2017
Home / شہر کی خبریں / شادی شدہ خاتون کو 50 تولے سونا رکھنے کی اجازت

شادی شدہ خاتون کو 50 تولے سونا رکھنے کی اجازت

کنواری لڑکیوں کی ملکیت میں 250 گرام سونے کی گنجائش
حیدرآباد۔6۔ڈسمبر (سیاست نیوز) سونے اور زیورات پر حکومت کی جانب سے عائد کردہ حد کے مطابق غیر شادی شدہ لڑکی کو 250گرام سونا یعنی 25تولہ سونا رکھنے کی اجازت حاصل ہے اسی طرح شادی شدہ خاتون 500گرام (50تولہ) سونا رکھ سکتی ہے اور مرد کیلئے 100گرام(10تولہ) سونے رکھنے کی اجازت حاصل ہے لیکن اس حد کے مطابق رکھے جانے والے سونے کیلئے بھی ذرائع آمدنی بتانا ضروری ہے۔ ایسا نہیں کہ کوئی اپنی دو غیر شادی شدہ لڑکیوں کی ملکیت کے طور پر 500گرام سونا رکھ لے بلکہ سونا رکھنے والے پر لازمی ہے کہ وہ اس کے خریدی کے ذرائع بھی ظاہر کرنے کے موقف میں رہے۔ ملک کے عوام کے پاس موجود سونے کا حکومت کس طرح پتہ لگا سکتی ہے اس سوال کا جواب دیتے ہوئے ماہرین کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے محکمہ انکم ٹیکس خفیہ اطلاعات یا کسی پر نظر رکھتے ہوئے ان کے پاس دھاوا کرتے ہوئے تنقیح کا اختیار رکھتی ہے اور تنقیح کے دوران جو زیورات یا سونا برآمد ہوگا اس کے متعلق تفتیش کی جائے گی اور اس سونے کی خریدی کے ذرائع کے متعلق انکشاف کرنا لازمی ہوگا۔ جس طرح کہا جا رہا ہے کہ موروثی زیورات یا سونے پر کوئی ٹیکس عائد نہیں ہوگا تو اس کے متعلق شواہد پیش کرنے ہوں گے کہ دھاوے یا تنقیح کے دوران برآمد کیا جانے والا سونا موروثی ہے۔ سونے کی خریدی یا اپنے پاس موجود سونے کے متعلق تفصیلات سے بتانے سے قاصر رہنے والوں کے اثاثوں پر نئے ترمیم شدہ انکم ٹیکس قوانین کے مطابق ٹیکس عائد کیا جائے گا اور ان پر جرمانہ عائد کئے جانے کی گنجائش بھی موجود ہے۔ دریافت کئے جانے کی صورت میں سونے کی خریدی کے رسائد اور تحفہ میں وصول کئے گئے ذرائع کے متعلق بھی انکشاف لازمی ہوگا بصورت دیگر حد سے تجاوز کرنے والے سونے کو ضبط کرتے ہوئے کاروائی کا انکم ٹیکس عہدیداروں کو اختیار حاصل رہے گا ۔ جن لوگوں کے پاس سونے کی شکل میں اثاثہ جات منظورہ حد یا اس سے زائد بھی موجود ہیں تو انہیں ذرائع آمدنی اور اس کی خریدی کی تفصیلات سے واقف کروانے پر کوئی مشکلات پیش نہیں آئیں گی بلکہ ان کے یہ اثاثہ جات محسوب آمدنی میں شمار کئے جائیں گے۔غیر معلنہ آمدنی سے خریدے گئے سونے پر انکم ٹیکس کے انہی قوانین کا اطلاق ہوگا جو قوانین غیر محسوب دولت رکھنے پر عائد کئے جاتے ہیں۔سونا رکھنے والوں پر یہ لازمی ہوگا کہ انہیں اس سونے کی خریدی اور محسوب آمدنی کے ذریعہ خریدی کا ثبوت پیش کریں کیونکہ ایسا نہ کرنے کی صورت میں اس سونے کو بھی غیر محسوب دولت میں ہی شمار کیا جائے گا۔ترمیم شدہ انکم ٹیکس قوانین میں سونا رکھنے کی حد متعین کئے جانے کے بعد جو صورتحال پیدا ہوئی ہے اس صورتحال میں سونے کی شکل میں اثاثہ جمع کروانے والا طبقہ مشکلات کا شکار بنتا جا رہاہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT