Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ’’شادی مبارک‘‘ اسکیم ، میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات

’’شادی مبارک‘‘ اسکیم ، میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات

درمیانی افراد کے رول اور حقیقی مستحقین کی جانچ ، اینٹی کرپشن بیورو کے دھاوے
حیدرآباد۔/17مارچ(سیاست نیوز) اینٹی کرپشن بیورو کی ٹیم نے آج شادی مبارک اسکیم میں بے قاعدگیوں کا جائزہ لینے کیلئے حیدرآباد اور رنگاریڈی کے ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر دفاتر پر دھاوا کیا۔ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس رینک کے عہدیدار کی قیادت میں پانچ رکنی ٹیم نے آج اچانک حج ہاوز پہنچ کر ’ شادی مبارک‘ کی منظورہ درخواستوں کا جائزہ لیا۔ انہوں نے حیدرآباد ڈی ایم ڈبلیو آفس میں موجود عہدیداروں، ملازمین اور درخواست گذاروں سے بات چیت کی۔ عوام سے درخواستوں کی یکسوئی کے سلسلہ میں درمیانی افراد کے رول کے بارے میں استفسار کیا اور بعض درخواستوں کی جانچ کی۔ انہوں نے حیدرآباد کے ڈی ایم ڈبلیو او کے چاری سے بات چیت کرتے ہوئے شادی مبارک اسکیم کی منظوریوں میں حائل دشواریوں اور اسٹاف کی کمی جیسے اُمور کے بارے میں معلومات حاصل کی۔ اے سی بی کی ٹیم نے حیدرآباد میں شادی مبارک کی منظورہ ہزاروں درخواستوں میں سے ہر منڈل سے 50-50منظورہ درخواستوں کو حاصل کرلیا تاکہ ان کے حقیقی مستحق ہونے کا پتہ چلایا جاسکے۔ انہوں نے کمپیوٹر سے ان درخواستوں کا ریکارڈ حاصل کرلیا ہے۔

منظورہ درخواستوں کے درمیان سے یہ منظورہ فارمس حاصل کئے گئے۔ اینٹی کرپشن بیورو کی ٹیم ان درخواستوں کے مستحقین کے پاس پہنچ کر معلومات کرے گی۔ رنگاریڈی میں بھی اسی طرح کی تحقیقات کی جائیں گی۔ اینٹی کرپشن بیورو کی ٹیم تقریباً نصف دن تک ڈی ایم ڈبلیو آفس میں موجود رہی جس سے حج ہاوز میں موجود اقلیتی دفاتر کا اسٹاف کافی چوکس دیکھا گیا۔ دیگر اداروں کو اندیشہ تھا کہ ٹیم ان کے دفتر پر بھی دھاوا کرسکتی ہے۔ شادی مبارک اسکیم کے تحت حیدرآباد میں 3000سے زائد درخواستیں زیر التواء ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کی سبسیڈی اسکیم کیلئے بھی اسی طرح کی جانچ کی جائے گی اور اینٹی کرپشن بیورو منظورہ درخواستوں کو حاصل کرتے ہوئے درخواست گذاروں کے مستحق ہونے اور اجرائی میں بے قاعدگیوں کا پتہ چلائے گا۔اینٹی کرپشن کے ڈائرکٹر جنرل اے کے خاں کو حکومت نے اقلیتی بہبود محکمہ کا نگرانکار مقرر کیا ہے اور انہیں اقلیتی اسکیمات میں کئی بے قاعدگیوں کی شکایات ملی ہیں جس کی جانچ شروع کی گئی۔ چیف منسٹر کے سی آر نے خود بھی اسکیمات میں بے قاعدگیوں کی بات کہی تھی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT