Tuesday , September 26 2017
Home / کھیل کی خبریں / شارجہ ٹسٹ میں بیٹسمنوں نے غیرذمہ داری دکھائی :مصباح

شارجہ ٹسٹ میں بیٹسمنوں نے غیرذمہ داری دکھائی :مصباح

SHARJAH, UNITED ARAB EMIRATES - NOVEMBER 02: Wahab Riaz of Pakistan takes the wicket of Jermaine Blackwood of West Indies on day four of the third test between Pakistan and West Indies at at Sharjah Cricket Stadium on November 2, 2016 in Sharjah, United Arab Emirates.Ê (Photo by Chris Whiteoak/Getty Images)

شارجہ ، 3 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے کپتان مصباح الحق نے آج کہا کہ شارجہ میں تاریخ رقم کرنے کا نادر موقع ضائع ہوگیا ، بیٹسمنوں نے ڈسپلن کا مظاہرہ نہیں کیا ، یاسر شاہ بھی توقعات پر پورا نہیں اترے۔ تیسرے و آخری ٹسٹ کی اختتامی تقریب میں مصباح نے کہا کہ پہلی اننگز میں 300 سے کم اسکور پر آؤٹ ہونے کے بعد میچ میں واپس نہیں آسکے ۔ ٹسٹ کیپٹن نے غلطیوں کا اعتراف کرتے ہوئے یاسر کی بولنگ کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا، جنھیں جملہ 21 وکٹیں لینے پر ’مین آف دی سیریز‘ ایوارڈ دیا گیا۔ مصباح نے کہا کہ ٹیم نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے دورے میں بہتر کھیل پیش کرے گی۔ بہرحال پاکستانی کپتان کو شارجہ ٹسٹ ہارنے پر سخت مایوسی ہوئی ہے اور اُن کہنا ہے کہ اس وقت پاکستانی ٹیم جس مقام پر کھڑی ہے، اس صورتحال میں اپنے سے نچلی رینکنگ کی ٹیم سے اپنے مانوس حالات میں ہارنا بہت مایوس کن ہے۔ ویسٹ انڈیز نے آج پاکستان کو 5 وکٹوں سے شکست دے کر سیریز میں اپنی ناکامی کے فرق کو 1-2 تک گھٹایا۔ مصباح نے تسلیم کیا کہ پاکستانی ٹیم نے ویسٹ انڈیز کو زیادہ اہمیت نہیں دی۔ اسی لئے پچھلے دو ٹسٹ میچوں میں بھی اسے مشکل ہوئی اور شارجہ ٹسٹ میں اس نے بہت زیادہ غلطیاں کر ڈالیں۔ پاکستانی کپتان نے کوچ مکی آرتھر کی اس بات سے اتفاق نہیں کیا کہ ٹیم کا مشن شارجہ ٹسٹ سے قبل ہی مکمل ہو چکا تھا۔ تاہم انھوں نے یہ کہا کہ طویل سیریز کھیلنے کی صورت میں کبھی کبھی کھلاڑی تن آسانی کا شکار ہوجاتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ سیریز پہلے ہی جیت لینے کے باوجود پاکستانی ٹیم شارجہ ٹسٹ ہر حال میں جیتنا چاہتی تھی کیونکہ اس وقت پاکستانی ٹیم جس پوزیشن پر ہے، اس میں ہر ٹسٹ میچ اس کے لئے بڑی اہمیت کا حامل ہے لیکن اپنے سے نچلی رینکنگ کی ٹیم سے ہارجانا مایوس کن ہے۔ مصباح نے کہا کہ پاکستانی ٹیم نے دونوں اننگز میں بہت خراب بیٹنگ کی اور فیلڈنگ بھی اچھی نہیں تھی۔ اس کے برعکس ویسٹ انڈیز نے نظم و ضبط کے ساتھ کرکٹ کھیلی۔ مصباح الحق کا بحیثیت کپتان یہ 49 واں ٹسٹ میچ ہوا اور وہ سب سے زیادہ ٹسٹ میچوں میں قیادت کرنے والے پاکستانی کپتان بنے ہیں لیکن اُن کا کہنا ہے کہ اُن کے نزدیک زیادہ اہمیت ریکارڈ کے بجائے جیت کی ہے۔ مصباح نے کہا کہ ویسٹ انڈیز کی ٹیم جوں جوں کھیلتی رہے گی اس کی کارکردگی میں بہتری آتی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT