Friday , September 22 2017
Home / دنیا / شامی باغی حلب کا راستہ کھولنے میں ناکام

شامی باغی حلب کا راستہ کھولنے میں ناکام

مشرقی علاقہ کے محصورہ عوام اشیائے ضروریہ سے محروم
بیروت ۔ 10جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) شامی باغیوں نے سرکاری افواج کے ساتھ خوفناک جنگ کی لیکن  شہر حلب کو راتوں رات رسد پہنچانے کا راستہ کھولنے میں ناکام رہے ۔ اس کوشش میں کم از کم 29جنگجو ہلاک ہوگئے ۔ جارحانہ حملے کا آغاز سرکاری افواج کو کیسٹیلو شاہراہ سے پسپا کرنے کی کوشش کے طور پر ہوا لیکن اس کے نتیجہ میں اپوزیشن کے زیرقبضہ شہر حلب کے مشرقی نصف حصہ پر بھی جس کا سرکاری فوج نے کامیابی سے محاصرہ کررکھا ہے ‘ جارحانہ کارروائی کی شکل میں منظر عام پر آیا ۔ شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے کہا کہ اسلام پسند 29جنگجو جن کا تعلق فیلاق الشام اور القاعدہ سے تھا ہلاک کردیئے گئے ۔ برطانیہ میں قائم نگران کار ادارہ نے کہا کہ سرکاری فوجیوں کی ہلاکتیں بھی واقع ہوئیں لیکن فوری طور پر مہلوکین کی تعداد کا علم نہیں ہوسکا ۔ حملوںکا سلسلہ ختم ہوچکا ہے اور شاہراہ مکمل طور پر ناکہ بندی کا شکار ہے ۔ رصدگاہ کے سربراہ رامی عبدالرحمن نے کہا کہ کیسٹیلو شاہراہ مؤثر انداز میں سرکاری افواج کے قبضہ میں ہے ۔ جمعرات سے ہی یہ قبضہ برقرار ہے جب کہ سرکاری فوج نے کلیدی سربراہ کے راستہ کو فائرنگ کی زد میں لینے والی پہاڑی پر قبضہ کرلیا ہے ۔ہفتہ کے دن سرکاری فوجی شاہراہ 500میٹر کے فاصلہ کے اندر تھے اور کسی بھی گاڑی پر جو اس سڑک کو استعمال کرنے کی کوشش کرتی تھی حملہ کا نشانہ بنارہے تھے ۔ شہر کے مشرقی جانب سے ایک اخباری نمائندے نے اطلاع دی ہے کہ اپوزیشن کے گروپس شہریوں کو یہ سڑک استعمال کرنے سے روک رہے ہیں ۔ حکومت کے توپ خانے کی مسلسل فائرنگ اور بیارل بم حملوں کی اتوار کی صبح سے ہی شہر کے مشرقی علاقہ سے اطلاع مل رہی ہے ۔ یہ تشدد فوج کی جانب سے ہفتہ کے دن ملک گیر سطح پر جنگ بندی میں 72گھنٹے کی توسیع کے تحریری اعلان کے باوجود جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT