Friday , March 24 2017
Home / Top Stories / شامی بحران کے خاتمہ کے بعد داعش کا صفائے کا عزم : گوٹیریس

شامی بحران کے خاتمہ کے بعد داعش کا صفائے کا عزم : گوٹیریس

UNSG A. Guterres addresses journalist at the SC stakeout.

ریاض ۔ 14 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس نے کہا ہے کہ شام میں جاری بحران کے سیاسی حل سے سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے خاتمے کی راہ ہموار ہوگی۔انھوں نے کہا کہ شامی بحران اقوام متحدہ کے دنیا پر اثرات کے لیے ایک مشکل امتحان ہے اور ان کے نزدیک مستقبل قریب میں مہاجرین کے بحران کا خاتمہ ہوتا نظر نہیں آرہا ہے۔عالمی ادارے کے سربراہ نے کہا کہ شامی بحران کے ایک جامع سیاسی حل کی عدم موجودگی کی وجہ سے ہی داعش کو پھلنے پھولنے کا موقع ملا تھا۔ انھوں نے الریاض میں شامی حزبِ اختلاف کی جانب سے جنیوا مذاکرات میں شرکت کے لیے وفد کی تشکیل پر خوش امیدی کا اظہار کیا ہے۔انھوں نے یمن میں جاری بحران پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یمنی عوام اس وقت ناقابل قبول نامساعد حالات سے گزر رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان بحران کا سیاسی حل تمام فریقوں کے لیے فائدہ مند ہونا چاہیے۔انھوں نے واضح کیا کہ ایران کے مفادات کو خطے کے ممالک پر اثر انداز نہیں ہونا چاہیے۔واضح رہے کہ ایران شامی تنازعے میں اہم کردار ادا کررہا ہے اور اس کے فوجی اور تربیت یافتہ شیعہ ملیشیاؤں کے جنگجو شامی صدر بشارالاسد کی فوج کے شانہ بشانہ باغی گروپوں کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ایران پر خطے کے ممالک یمنی تنازعے میں مداخلت اور حوثی ملیشیا کو مسلح کرنے کے الزامات عاید کرتے چلے آرہے ہیں۔اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ سلامتی کونسل کے رکن ممالک کے درمیان تقسیم سے کونسل کی عالمی بحرانوں سے نمٹنے کے لیے صلاحیت متاثر ہوئی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT