Monday , August 21 2017
Home / دنیا / شامی پناہ گزینوں کے موقف پر وائیٹ ہاؤس میں گورنرس کاہنگامی اجلاس

شامی پناہ گزینوں کے موقف پر وائیٹ ہاؤس میں گورنرس کاہنگامی اجلاس

پناہ گزینوں کی آمد پر سکیوریٹی سخت کرنے کا مطالبہ، بائیو میٹرکس اور فنگر پرنٹس متعارف
کئے جانے کا امکان، پناہ گزینوں کی زائداز نصف تعداد بچوں پر مشتمل
لیانسنگ (امریکہ) 18 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کی متعدد ریاستوں کے گورنرس پیرس میں پیش آئے دہشت گردانہ واقعہ کے بعد شامی پناہ گزینوں کی امریکہ میں بازآبادکاری کے انتہائی مخالف ہوچکے ہیں اور صورتحال یہاں تک پہنچ گئی ہے کہ صدر امریکہ بارک اوباما کو اس معاملہ میں مداخلت کرنی پڑی۔ اوباما نے اس سلسلہ میں ایک کانفرنس طلب کی اور یہ سمجھانے کی کوشش کی کہ شامی پناہ گزینوں کی آمد پر امتناع عائد کرنے کے بجائے اُن کی جانچ پڑتال میں شدت پیدا کی جائے۔ 90 منٹ تک جاری رہنے والی اس کانفرنس میں 34 گورنرس نے شرکت کی جن میں صرف 13 گورنرس ایسے تھے جنھوں نے اپنے شکوک و شبہات دور کرنے کے لئے سوالات کی بوچھاڑ کردی۔ جن سینئر افسران نے اس میں شرکت کی اُن میں صدر اوباما کے چیف آف اسٹاف ڈیرس میک ڈونف اور ڈپارٹمنٹ آف ہوم لینڈ سکیوریٹی، ریاستی، صحت اور انسانی خدمات، ایف بی آئی اور نیشنل کاؤنٹر ٹیررزم سنٹر کے نمائندے شامل ہیں۔

اس موقع پر اڈمنسٹمریشن کے عہدیداروں نے کہاکہ شامی پناہ گزینوں کی اسکریننگ میں سمندر پار انٹرویو، بائیو میٹرکس، فنگر پرنٹنگ اور بائیو گرافیکل تحقیقات شامل ہونی چاہئے تاکہ یہ معلوم ہوجائے کہ کوئی بھی فرد حقیقتاً پناہ گزین کا موقف حاصل کرنے کا مستحق ہے یا پھر اس کی موجودگی امریکہ کے لئے خطرہ ہوسکتی ہے۔ دریں اثناء واشنگٹن ریاست کے گورنر نے کہاکہ وفاقی حکومت نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ شامی پناہ گزینوں کو بھی سکیوریٹی کے اُن تمام مراحل سے گزرنا پڑے گا جن مراحل سے امریکہ آنے والے ایک عام مسافر کو گزرنا پڑتا ہے۔ ڈیموکریٹک جے انسلی نے کہاکہ ڈپارٹمنٹ صرف اُن افراد پر زائد توجہ مرکوز کرے گا جن سے خطرات لاحق ہوں اور سکیوریٹی عملہ اتنا تجربہ کار ہے کہ انھیں یہ پتہ لگانے میں ذرہ برابر مشکل نہیں ہوگی کہ کون خطرناک ہے اور کون نہیں۔ علاوہ ازیں شامی پناہ گزینوں کی نصف سے زیادہ تعداد بچوں پر مشتمل ہے۔ اریزونا کے ری پبلکن گورنر ڈوگ ڈوسی نے کہاکہ اسکریننگ عمل پر پوری تو کئی قانونی سوالات اُٹھ گئے ہیں جن کے جوابات ہنوز لیت و لعل میں پڑے ہوئے ہیں۔ اریزونا میں وفاقی قوانین کے مطابق پر اہم فیصلہ کے لئے باہمی مشاورت ضروری ہوتی ہے اور ایسا معلوم ہوتا ہے کہ اس کانفرنس کے ذریعہ وفاقی قوانین کو درکار ضابطہ کی تکمیل نہیں کی گئی۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ایک بار ضروری ہے کہ یو ایس کی زائداز 50 ریاستوں کے منجملہ زائداز نصف ریاستوں کے گورنرس نے پیرس میں دہشت گردانہ واقعہ کے بعد شامی پناہ گزینوں کی امریکہ آمد پر شک و شبہات کا اظہار کرنا شروع کردیا تھا۔ اُن کی یہ خواہش ہے کہ پناہ گزینوں کی آمد کے سلسلہ کو کچھ روز تک مسدود کردیا جائے تاکہ پیرس واقعہ کی تحقیقات مزید نتائج سامنے آئیں اور اُسی مطابقت سے کوئی ٹھوس فیصلہ کیا جائے۔ دوسری طرف خود صدر اوباما گورنرس کو یہ کہہ کر تسلی دے رہے ہیں کہ شامی پناہ گزینوں کی آمد کے سلسلہ کو مسدود کرنا دانشمندی نہیں ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT