Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / شام میں مغربی طاقتیں بے حد کمزور : بشارالاسد

شام میں مغربی طاقتیں بے حد کمزور : بشارالاسد

روس کے فضائی حملوں کے بعد صورتحال تبدیل، ایران بھی مددگار
لندن۔ 6 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) صدر بشارالاسد نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ ملک شام میں مغربی طاقتیں ’’بہت زیادہ کمزور‘‘ ہوتی جارہی ہیں۔ انہوں نے ایک رازدارانہ انٹرویو میں جو آج شائع ہوا، یہ بات بتائی۔ بشارالاسد نے برطانوی ہفت وار ’’سنڈے ٹائمس‘‘ کو بتایا کہ ماضی میں اگر وہ کوئی بات کہتے تو عوام کا یہ ردعمل ہوتا کہ صدر شام حقیقت سے لاعلم ہیں، لیکن اب صورتحال مختلف ہوچکی ہیں۔ مغربی طاقتیں بہت زیادہ کمزور ہوتی جارہی ہیں۔ وہ اس موقف میں نہیں کہ عوام کے سامنے یہ وضاحت کرسکیں کہ آخر ہو کیا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایس آئی ایس تیل اسمگلنگ کررہی تھی اور عراق میں تیل کے ذخائر سے استفادہ کیا جارہا تھا، امریکی سیٹلائیٹ اور ڈرونس کے ذریعہ ان سب پر نظر تھی لیکن اس وقت مغربی ممالک نے کچھ نہیں کہا۔ آئی ایس تیل کی اسمگلنگ کے ذریعہ رقم بٹورتی رہی۔ جیسے ہی روس نے مداخلت کی، آئی ایس کا زوال شروع ہوا۔ بشارالاسد نے یہ تسلیم کیا کہ روسی فضائی حملوں نے اس معاملے میں اہم رول ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ صورتحال بدل جانے یا مختلف ہونے کی ایک ہی وجہ ہے اور وہ فضائی طاقت ہے۔ روس کے پاس فضائی طاقت ہے اور ہمارے پاس نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم شام میں آنے والے لامحدود دہشت گردوں سے لڑ رہے ہیں اور ہمیں کافی جدوجہد کرنی پڑ رہی ہے۔ اس صورتحال کی ہم روسی فضائی طاقت اور ایران کی مدد سے پابجائی کرپائے۔ انہوں نے کہا کہ روس نے کبھی بھی مداخلت کی کوشش نہیں کی کیونکہ اسے ہم سے کچھ نہیں چاہئے۔ بشارالاسد نے حلب میں باغی طاقتوں کو کچلنے کے عزم کا اظہار کیا۔ شام میں مارچ 2011ء سے جاری بدامنی اور جنگ میں تاحال 3 لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT