Thursday , May 25 2017
Home / دنیا / شام کے دولت اسلامیہ زیرقبضہ علاقہ پر فضائی حملے

شام کے دولت اسلامیہ زیرقبضہ علاقہ پر فضائی حملے

کئی ہلاکتیں‘ قیدیوں کی اجتماعی ہلاکت اور نعشیں جلانے کا امریکی الزام
بیروت۔ 15 مئی ( سیاست ڈاٹ کام) دولت اسلامیہ زیرقبضہ شام کے دیہات اور قصبہ پر فضائی حملہ میں کم از کم 32 شہری گزشتہ دو دن میں ہلاک ہوگئے۔ جبکہ لاکھوں افراد ان علاقوں میں پھنسے ہوئے ہیں اور رقعہ کیلئے جنگ ان کے سر پر منڈلارہی ہے۔ دریں اثناء امریکی سفیر برائے شام نے الزام عائد کیا کہ گزشتہ دو دن کے دوران حکومت شام نے سینکڑوں قیدیوں کو ہلاک کردیااور ان کی نعشیں ایک وسیع مقام پر نذرآتش کردی گئیں۔ ٹرمپ انتظامیہ کے محکمہ خارجہ کی اطلاع کی بموجب50 قیدیوں کو ایک ہی دن میں فوجی قیدخانہ میں پھانسی پر لٹکادیا گیا۔ زیادہ ترنعشیں جلادینے کے بعد جلانے کے مقام پر ہی دفن کردی گئیں۔ امریکی سفارت کار برائے مشرق وسطی اسٹورٹ جونس نے اطلاع دی کہ اجتماعی ہلاکتیں جیل خانہ سیدنایہ میں عمل میں آئیں۔ تجارتی سیٹلائیٹ سے لی ہوئی تصویریں محکمہ خارجہ امریکہ کی جانب سے جاری کی گئی جس میں دکھایا گیا کہ قیدخانہ کی عمارت میں نعشوں کو نذرآتش کرنے علاقہ مختص کیا گیا ہے۔ 2013 ء سے شام میں خانہ جنگی جاری ہے۔ لیکن پہلی بار اجتماعی ہلاکتوں اور نعشوں کو جلادینے کا واقعہ منظرعام پر آیا ہے۔ دریں اثناء اقوام متحدہ کے سفیر اسٹافنڈ ڈی مسٹورا نے اخباری نمائندوں کو یقین دلایا کہ منگل سے 4 روزہ امن بات چیت کا آغاز ہوجائے گا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ کوئی ٹھوس نتیجہ برآمد ہوگا۔ جبکہ شامی قائد نے کسی ٹھوس نتیجہ کے برآمد ہونے کی توقع ظاہر نہیں کی۔ تاہم شام کی حکومت اور خانہ جنگی کے دیگر فریقین ایک دوسرے کے روبرو بات چیت کی میز پر ہوں گے۔ اتوار کے دن دیہات اکیرشی اور قصبہ بوکمال جو شام اور عراق کی سرحد پر واقع ہیں ‘ امریکی زیرقیادت اتحادی فوج نے انہیں فضائی حملوں کا نشانہ بنایا تھا۔ محکمہ دفاع امریکہ نے تسلیم کیا کہ ان حملوں کی وجہ سے کئی بے قصور شہری ہلاک ہوگئے۔ یہ دونوں علاقے 2014 سے دولت اسلامیہ کے زیرقبضہ ہیں۔ تاہم انسانی حقوق کارکنوں اور نگرانگار گروپس کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد اور بھی زیادہ ہوسکتی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT