Wednesday , July 26 2017
Home / Top Stories / شام کے فضائی اڈہ پر امریکہ کا انتہائی طاقتور فوجی حملہ

شام کے فضائی اڈہ پر امریکہ کا انتہائی طاقتور فوجی حملہ

جنگ زدہ ملک میں کیمیائی حملوں کے خلاف امریکی جواب، صدر اسد نے
بے بس مرد، خواتین اور بچوں کی جان لی ہے، صدر ٹرمپ کا ردعمل
واشنگٹن ۔ 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج شامی فضائی اڈہ پر ایک بڑا فوجی حملہ کیا جو متحارب صدر بشارالاسد کی حکومت کی طرف سے شامی شہریوں پر کئے گئے مبینہ بربریت انگیز کیمیائی حملہ کے جواب میں کیا گیا ہے۔ امریکہ نے تمام مہذب ممالک پر زور دیا ہیکہ وہ بھی شام میں بے قصور عوام کی ہلاکتوں کے خلاف اس (امریکہ) کی کارروائی میں شامل ہوجائیں۔ شام نے کہا ہیکہ امریکی حملے میں اس کے سات افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ روس نے اس حملہ پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے شام میں فضائی تصادم سے گریز کیلئے امریکہ کے ساتھ طئے شدہ سمجھوتہ کو کالعدم کردیا ہے۔ امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے جو فلوریڈا کے تفریح گاہ میں کہا کہ امریکہ جنگی جہازوں سے رات کے پچھلے پہر 3:45 بجے شامی فضائی پٹی، ہینگرس، کنٹرول ٹاورس اور اسلحہ کے گوداموں کو نشانہ بنایا گیا۔ ٹرمپ نے کہا کہ انہوں نے شامی فضائی پٹی کو میزائیل حملوں کا نشانہ بنانے کا حکم دیا تھا۔
ٹرمپ نے شامی شہریوں پر کیمیائی حملوں کو ہولناک قرار دیتے ہوئے

بشارالاسد نے بے بس مرد، خواتین اور بچوں کی جان لی : ٹرمپ
شامی فضائی اڈہ پر امریکہ کے طاقتور فوجی حملے کی بھرپور مدافعت، واشنگٹن کو سعودی عرب، اسرائیل، ترکی کی تائید، روس اور شام پر تنقید

واشنگٹن ۔ 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے صدر ٹرمپ نے شامی شہریوں پر کیمیائی حملوں کو ہولناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ صدر بشارالاسد نے بے بس مرد، خواتین اور بچوں کی جان لی ہے۔ امریکی صدر نے کہا کہ ’’کئی افراد کیلئے یہ ایک سسکتی ہوئی لیکن انتہائی بہیمانہ موت تھی حتیٰ کہ خوبصورت کمسن بچے بھی اس انتہائی بربریت انگیز حملے میں بے رحمی کے ساتھ قتل کئے گئے۔ خدا کی مخلوق میں شامل ایسے بے قصور کمسن بچوں کو کبھی ایسی اندوہناک موت نہیں دی جانی چاہئے‘‘۔ ٹرمپ نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ ’’امریکہ کی قومی سلامتی کا یہ کلیدی مفاد ہے کہ اس قسم کے ملک کیمیائی اسلحہ کے استعمال کو روکا جائے۔ شام میں گذشتہ چھ سال سے جاری خانہ جنگی کے دوران امریکہ نے بشارالاسد حکومت کے خلاف پہلی مرتبہ راست فوجی کارروائی کیا ہے جس سے یہ اس علاقہ میں امریکی فوجی کارروائی میں قابل لحاظ اضافہ کا ثبوت ملتا ہے۔ صدر ٹرمپ نے کہا کہ ’’اس بات پر کوئی شبہ یا اختلاف نہیں ہے کہ شام نے کیمیائی اسلحہ کے سمجھوتہ کے تحت اپنے عہد اور ذمہ داریوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ممنوعہ زہریلی گیس اور دیگر کیمیائی اسلحہ کا استعمال کیا ہے اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے مطالبہ کو نظرانداز کردیا ہے۔ امریکہ کے صدر نے مزید کہا کہ ’’بشارالاسد کے رویہ میں تبدیلی لانے کیلئے گذشتہ کئی سال سے جاری کوششیں یکلخت انتہائی ڈرامائی انداز میں ناکام ثابت ہوگئی ہیں جس کا نتیجہ میں پناہ گزینوں کا بحران سنگین ہوتا جارہا ہے اور سارا علاقہ بدستور استحکام شکنی کا شکار ہورہا ہے جس سے امریکہاور اس کے حلیفوں کو خطرہ لاحق ہوگیا۔ امریکہ کے صدر ٹرمپ نے اپنے چینی ہم منصب ژی جن پنگ سے اپنی پہلی ملاقات سے قبل مختصر ریمارکس میںکہا کہ ’’ہم خدا کی حکمت و رہنمائی کے طلبگار ہیں کیونکہ ہم ایک انتہائی گڑبڑزدہ دنیا کے چیلنج کا سامنا کررہے ہیں۔ ہم زخمیوں کی زندگیوں اور متوفیوں کی ارواح کیلئے سکون کی دعا کرتے ہیں اور ہم امید کرتے ہیں کہ امریکہ جب تک انصاف، امن و ہم آہنگی کیلئے کھڑا رہے گا امن و انصاف برقرار رہے گا۔ خدا، امریکہ و ساری دنیا پر فضل و کرم فرمائے۔ شب بخیر‘‘۔ اس دوران امریکی وزیرخارجہ ریکسن ٹلرسن نے جو آئندہ ہفتہ ماسکو کا دورہ کریں گے، آج کہا کہ شامی کیمیائی اسلحہ کے بحفاظت حصول کیلئے 2013ء سمجھوتہ پر عمل آوری سے متعلق اپنی ذمہ داری نبھانے میں روس بری طرح ناکام ہوگیا ہے۔ ٹلرسن نے کہا کہ ’’ٹلرسن نے کہا کہ واضح طور پر روس اپنی ذمہ داری نبھانے میں ناکام ہوگیا ہے۔ روس پردہ پوشی کررہا ہے یا پھر سمجھوتہ پر عمل آوری نبھانے کیلئے نااہل ہے‘‘۔ اسرائیل، سعودی عرب، ترکی، برطانیہ اور آسٹریلیا نے شام پر امریکی حملوں کی تائید کرتے ہوئے اس فوجی کارروائی کو ’’مناسب و منصفانہ‘‘ اقدام قرار دیا ہے۔ شام نے امریکی فوجی کارروائی کو احمقانہ اور غیرذمہ دارانہ قرار دیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT