Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / شاہ رخ کے خلاف ریمارکس سے وجئے ورگیہ دستبردار

شاہ رخ کے خلاف ریمارکس سے وجئے ورگیہ دستبردار

متنازعہ ٹوئیٹس سے بی جے پی کی بے تعلقی، شاہ رخ خان ایک عظیم اداکار : وینکیا نائیڈو

نئی دہلی ۔ 4 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بالی ووڈ اسٹار شاہ رخ خاں کے خلاف ریمارکس پر مختلف گوشوں سے سخت تنقیدوں کے شکار بی جے پی رکن پارلیمنٹ کیلاش وجئے ورگیہ آج اپنے ان متنازعہ ٹوئیٹس سے دستبردار ہوگئے لیکن ادعا کیا کہ ہندوستان میں اگر عدم رواداری ہوتی تو امیتابھ بچن کے بعد شاہ رخ خان انتہائی مقبول ترین اداکار نہ بنتے۔ وجئے ورگیہ نے آج صبح ٹوئیٹر پر لکھا کہ ’’میرا ارادہ کسی کے جذبات مجروح کرنا نہیں تھا۔ میں کل کے ٹوئیٹس سے دستبردار ہوتا ہوں‘‘۔ اس دوران وجئے ورگیہ کے ریمارکس سے خود ان کی پارٹی بی جے پی نے بھی بے تعلقی کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ اداکار کے بارے میں ورگیہ کے ریمارکس شخصی ہیں جو بی جے پی کے نظریات نہیں ہیں۔ انہوں نے گذشتہ روز یہ ریمارک کرتے ہوئے ایک متنازعہ کھڑا کردیا تھا کہ ’’شاہ رخ خاں ہندوستان میں رہتے ہیں لیکن ان کا دل پاکستان میں رہتا ہے‘‘۔ ان کے ریمارکس سے ایک دن قبل شاہ رخ خاں نے کہا تھا کہ ملک میں ’’انتہائی عدم رواداری‘‘ پھیل رہی ہے۔ اس دوران بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر ایم وینکیا نائیڈو نے کہا کہ وجئے ورگیہ نے جو کچھ کہا ہے وہ بی جے پی کا نظریہ نہیں ہے۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ’’ہم نے نہیں دیکھا کہ انہوں (وجئے ورگیہ) نے کیا کہا ہے لیکن انہوں نے جو کچھ بھی کہا کہ اس سے بی جے پی کا کوئی تعلق نہیں ہے کیونکہ ہماری پارٹی کسی کے انفرادی معاملات پر تبصرے نہیں کرتی‘‘۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ’’شاہ رخ خاں سے ہمیں کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ وہ ایک عظیم اداکار ہیں لیکن ان کے بارے میں وجئے ورگیہ نے کیا کہا ہے اس کے بارے میں نہیں جانتا‘‘۔

TOPPOPULARRECENT