Wednesday , October 18 2017
Home / Top Stories / شجرکاری کا معائنہ کرنے پیر سے چیف منسٹر کے اچانک دورے

شجرکاری کا معائنہ کرنے پیر سے چیف منسٹر کے اچانک دورے

پروگرام کو زبردست کامیابی سے ہمکنار کرنے وزرا و عہدیداروں کو ہدایت ۔ کیمپ آفس پر کے سی آر کا جائزہ اجلاس

حیدرآباد 22 جولائی ( این ایس ایس ) ریاست بھر میں جبکہ تلنگانہ حکومت کا شجر کاری پروگرام زور و شور سے جاری ہے اور اب تک تقریبا 12 کروڑ پودے لگائے جاچکے ہیں ایسے میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ پیر سے اضلاع کے اچانک دورے کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں تاکہ اس مہم کا جائزہ لیا جاسکے اور جو پودے لگائے جاچکے ہیں ان کی حفاظت پر توجہ کی جاسکے ۔ چیف منسٹر نے آج اپنے کیمپ آفس پر شجرکاری پروگرام کے تعلق سے ایک جائزہ اجلاس منعقد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی وزرا ‘ ارکان اسمبلی اور عہدیداروں کی شجرکاری پروگرام میں حصہ داری اور شراکت اس مہم کے نتائج میں ظاہر ہوگی ۔ انہوں نے تمام وزرا ‘ ارکان اسمبلی اور عہدیداروں سے کہا کہ وہ ایسے ریمارکس سے گریز کریں کہ پانی کی قلت اور لا پرواہی کی وجہ سے لگائے گئے پودے خشک ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھنا چاہئے جب تک آخری پودا بھی جنگی خطوط پر لگایا نہیں جاتا اور اس مہم کے نشانہ کی تکمیل نہیں ہوجاتی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اس مہم کے موثر ہونے کا جائزہ لے رہی ہے تاکہ اس مہم کو زبردست کامیابی سے ہمکنار کیا جاسکے ۔ انہوں نے جائزہ اجلاس میں واضح کیا کہ شجر کاری مہم اور ہریتا ہارم پروگرام کا مقصد ریاست کو سرسبز و شاداب بنانا ہے ۔ اس اجلاس میں وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ اور چیف سکریٹری ڈاکٹر راجیو شرما کے علاوہ دوسرے عہدیدار بھی موجود تھے ۔ چیف منسٹر نے وزرا کو ہدایت دی کہ وہ اپنے اضلاع ہی میں قیام کریں تاکہ پودے لگائے جاسکیں اور وہ اس مہم کے سلسلہ میں یومیہ کی اساس پر اپنی رپورٹ چیف سکریٹری ڈاکٹر راجیو شرما کو روانہ کریں۔ انہوں نے اس اجلاس کے دوران کچھ اضلاع کے انچارچ وزرا کو فون کرتے ہوئے شجرکاری مہم کے تعلق سے استفسار کیا اور بتایا کہ اس شجرکاری مہم کو توسیع دینے کیلئے مزید 1500 کروڑ روپئے کا فنڈ  مختص کیا جاچکا ہے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ریاست کے عوام اور کسان اس بات سے خوش ہیں کہ بارش اچھی ہو رہی ہے اور کسانوں کو چاہئے کہ وہ بارش سے فائدہ اٹھائیں اور شجرکاری میں حصہ لیں۔ مسٹر چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ فائر انجنوں اور واٹر ٹینکرس کی خدمات حاصل کرتے ہوئے شجرکاری مہم میں لگائے گئے پودوں کو پانی دینے پر توجہ دی جانی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ فائر انجنوں کے ڈرائیورس کو فون سیٹس فراہم کئے جانے چاہئیں تاکہ وہ نہ صرف آگ لگنے کے حادثات میں سرگرم ہوسکیں بلکہ شجرکاری میں لگائے گئے پودوں کو پانی بھی فراہم کرسکیں۔ یہ کام ضلع ‘ حلقہ اسمبلی ‘ ڈویژن ‘ میونسپلٹی اور گاوں پنچایت کی سطح پر ہونا چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT