Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / شجرکاری کے تحفظ کیلئے بلدیہ سے جیوٹیا گنگ کا آغاز

شجرکاری کے تحفظ کیلئے بلدیہ سے جیوٹیا گنگ کا آغاز

جالیوں کی تنصیب کا بھی منصوبہ، سرکردہ کمپنیوں سے بات چیت
حیدرآباد۔20اگسٹ (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں ہریتا ہرم اسکیم کے تحت کی گئی شجر کاری کے تحفظ کیلئے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے جیو ٹیاگنگ کا عمل شروع کرتے ہوئے ایسے مقامات کی نشاندہی کرنا شروع کردیا ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے بتایا کہ 652 مقامات کی نشاندہی کرتے ہوئے جیو ٹیاگنگ کرتے ہوئے محفوظ کیا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ جی ایچ ایم سی نے ان 652 مقامات پر 35لاکھ پودے لگائے ہیں جن کی حفاظت کے لئے شجرکاری کردہ مقامات کی جیو ٹیاگنگ کو ممکن بنایا گیا ہے۔ کمشنر جی ایچ ایم سی ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ جی ایچ ایم سی حدود میں لگائے گئے پودوں کو محفوظ رکھنے کیلئے ان کے اطراف جالیوں کی تنصیب کا بھی منصوبہ تیار کیا گیا ہے اور اس منصوبہ پر عمل آوری کیلئے خانگی شراکت داری کے لئے ملٹی نیشنل کمپنیو ںکو راغب کیا جائے گا اور ان کمپنیوں کے تعاون اور شہر کی مختلف غیر سرکاری تنظیموں کی اعانت سے ان پودوں کو محفوظ بنایا جائے گا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ شہر حیدرآباد کے حدود میں کی گئی شجر کاری کو محفوظ بنانے کیلئے کئے جانے والے اقدامات میں مختلف کالونیز کی سوسائیٹیز کو بھی شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے خانگی شراکت داری کے ذریعہ کئے جانے والے اس منصوبہ کو عملی جامہ پہنانے کی منصوبہ بندی کی جا چکی ہے اور اس سلسلہ میں کئی سرکردہ کمپنیوں کے ذمہ داران سے بات چیت کا عمل بھی جاری ہے۔ انہوںنے بتایا کہ شہر حیدرآباد کے حدودمیں لگائے گئے 35لاکھ پودوں کے تحفظ اور آئندہ برسوں کے دوران ان کے فروغ و تحفظ کیلئے ان کی جیو ٹیاگنگ کو ضروری تصور کیا گیا اسی لئے ان تمام 652 مقامات کی جیوٹیاگنگ کر لی گئی ہے جن مقامات پر شجرکاری مہم چلائی گئی تھی۔ ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ شہر میں 35لاکھ پودوں کے درخت کی شکل اختیارکرنے تک شہر میں ماحولیاتی آلودگی میں کافی تخفیف کی توقع کا امکان ہے۔انہوں نے بتایا کہ شہر میں بڑھ رہی ماحولیاتی آلودگی کوکم کرنے کیلئے جی ایچ ایم سی کی جانب سے شجر کاری کیلئے دیگر اقدامات پر بھی غور کیا جانے لگا ہے اور توقع ہے کہ ان پودوں کو محفوظ بنانے کے بعد دیگر منصوبوں کو روشناس کرواتے ہوئے شہر میں موجود ماحولیاتی آلودگی کو دور کرنے کے اقدامات کئے جائیں گے۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے کہا کہ جی ایچ ایم سی شہر میں صفائی اور شجرکاری کے علاوہ ترقی کو اولین ترجیح دے رہی ہے اسی لئے جیوٹیاگنگ کے ذریعہ شجرکاری کے مقامات کو محفوظ کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT