Sunday , April 30 2017
Home / ہندوستان / شراب کے تاجر وجئے مالیا کے بعد اسلحہ ڈیلر سنجے بھنڈاری بھی لندن فرار

شراب کے تاجر وجئے مالیا کے بعد اسلحہ ڈیلر سنجے بھنڈاری بھی لندن فرار

تحقیقاتی اداروں کو چکمہ دینے پر حکومت کو ایک اور جھٹکہ
نئی دہلی۔/22ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) اسلحہ کے ڈیلر سنجے بھنڈاری جن پر مختلف تحقیقاتی اداروں کی نظر تھی اندیشہ ہے کہ ملک سے فرار ہوگئے ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سنجے بھنڈاری نے لک آوٹ نوٹس سے بچنے کیلئے براہ نیپال‘ لندن پہنچ گئے ہوں گے۔ قبل ازیں بھنڈاری کو ماہ جون میں لندن جانے والی برٹش ایرویزفلائیٹ میں سوار ہونے سے روک دیا گیا تھا۔ انکم ٹیکس حکام نے ماہ اپریل میں بھنڈاری کی قیامگاہ پر چھاپہ مار کر خفیہ دفاعی دستاویزات برآمد کئے تھے جس کے بعد ماہ اکٹوبر میں دہلی پولیس نے قانون سرکاری راز کے دفعات کے تحت ان کے خلاف ایف آئی آر درج کیا تھا۔ متعدد کوششوں کے باوجود دہلی پولیس کے خصوصی کمشنر ( کرائم ) تاج حسین تبصرہ کیلئے دستیاب نہیں ہوسکے جبکہ وزارت داخلہ حکام بھی کوئی وضاحت پیش کرنے سے قاصر رہے۔ اسلحہ ڈیلر کی فراری کے تازہ واقعہ سے حکومت کو مزید پشیمانی اٹھانی پڑے گی کیونکہ شراب کے تاجر وجئے مالیا کو لندن سے واپس لانے میں ناکامی سے حکومت پہلے ہی سے اپوزیشن کے نشانہ پر ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کے چنگل سے بچ نکلنے کیلئے لندن مجرموں کا پرتعیش اور محفوظ ٹھکانہ بن گیا ہے۔ وجئے مالیا  نے بھی لندن فرار ہوکر برطانیہ میں سکونت کا پرمٹ حاصل کرلیا تھا اور اب بھنڈاری 59 مطلوبہ افراد کی فہرست میں شامل ہوگئے ہیں جن کے بارے میں تفتیشی اداروں کو شبہ ہے کہ لندن میں سکونت اختیار کرلی ہے۔ انکم ٹیکس انوسٹگیشن ونگ نے ماہ اپریل میں بھنڈاری کے مکان پر دھاوا کرکے بعض ای میلس کا پتہ چلایا تھا جس میں بھنڈاری اور صدر کانگریس سونیا گاندھی کے داماد رابرٹ وڈرا کے درمیان ربط ضبط پایا گیا۔ تاہم وڈرا کے وکلاء نے مشتبہ تعلقات کی تردید کی ہے۔ اگرچیکہ بھنڈاری انکم ٹیکس حکام کے روبرو حاضر ہوئے لیکن برطانیہ، متحدہ عرب امارات کے ساتھ معاشی رابطوں کی تردید کی۔ تاہم تحقیق کار یہ معلوم کرنے کی کوشش میں ہیں کہ بھنڈاری نے بیرونی ملک میں جائیدادوں کی خریداری کیلئے کن کمپنیوں کا استعمال کیا ہے۔ قانون سرکاری راز کے تحت کیس درج کرنے کے بعد چند ہفتے قبل بھنڈاری کو تازہ سمن جاری کیا گیا تھا۔ بھنڈاری کی قیامگاہ سے برآمد دستاویزات میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ 2 کمپنیوں کے ذریعہ دوبئی کی دو جائیدادوں میں سرمایہ کاری کی ہے۔ ممکن ہے کہ بھنڈاری سے قریبی تعلقات رکھنے والوں سے پوچھ تاچھ کی جائے گی جس میں وزارت فینانس کے ایک عہدیدار بھی شامل ہیں جو کہ گذشتہ سال ریٹائرڈ ہوگئے ہیں۔ علاوہ ازیں غیر ملکی کمپنیوں تھالیس گروپ ( فرانس کی ہمہ قومی کمپنی) یوروپین ایرونٹیک ڈیفنس اینڈ اسپیس کمپنی( کمرشیل اور ملٹری ایر کرافٹس، اسپیس سسٹم اور دیگر فوجی سازو سامان تیار کرتی ہے) کے ساتھ بھنڈاری کے تعلقات کی جانچ کی جائے گی۔ تحقیق کاروں کو شبہ ہے کہ بھنڈاری انڈین ایر فورس کے تربیتی طیارہ کی خریداری کی معاملت میں ملوث ہے۔1000 کروڑ روپئے مالیتی یہ ماملت بیشرو یو پی اے حکومت نے سال 2012 میں طئے کی تھی۔ جبکہ بھنڈاری کی کمپنیوں آفسیٹ انڈیا سلیوشن پرائیویٹ لمیٹیڈ اور اونا سافٹ ویر اینڈ سرویس پرائیوٹ لمیٹیڈ کی جانب سے ٹیکس چوری کی تحقیقات جاری ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT