Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / شرعی قوانین عورتوں کیلئے مصیبت نہیں راحت ہیں

شرعی قوانین عورتوں کیلئے مصیبت نہیں راحت ہیں

شریعت میں مداخلت کے خلاف کل ہند جمعیتہ المشائخ کا احتجاجی اجلاس مشائخ علماء و وکلاء کا خطابات
حیدرآباد /24 اکٹوبر ( پریس نوٹ ) دنیا کی کوئی طاقت بھی اللہ اور اس کے رسول ﷺکی بنائی ہوئی شریعت میں مداخلت نہیں کرسکتی ۔ البتہ اس پر عمل آوری کیلئے انتظامی اصلاحات کئے جاسکتے ہیں اور ایسے ہی کچھ اصلاحی اقدامات ان چند مسلم ممالک میں اٹھائے گئے جس کا حوالہ طلاق ثلاثہ اور دیگر زیر بحث مسائل پر حکومت ہند کی طرف سے سپریم کورٹ میں داخل کردہ حلفنامہ میں دیا گیا ہے ۔ اس کو بنیاد بناکر شریعت میں مداخلت کی راہ ہموار نہیں کی جاسکتی ۔ پروردگار عالم کے نازل کردہ دستور حیات کی رو سے بھی دو کے بعد تیسری طلاق سے رشتہ نکاح ختم ہوجاتا ہے ۔ یہ کوئی انسان کا بنایا ہوا اصول نہیں ہے بلکہ مذہب اسلام کی مقدس کتاب قرآن مجید میں نازل کردہ ارشاد ربانی ہے جو ناقابل تبدیلی و ترمیم ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مفکر اسلام مولانا مفتی خلیل احمد شیخ الجامعہ نظامیہ و رکن مسلم پرسنل لاء بورڈ نے کل ہند جمعیتہ المشائخ کے زیر اہتمام شریعت میں مداخلت کے خلاف نور منشن ملک پیٹ میں منعقدہ سرکردہ مشائخ و علماء کے ایک اہم اور نمائندہ اجلاس میں کیا ۔ جس کی صدارت قاضی سید شاہ اعظم علی صوفی قادری صدر کل ہند جمعیتہ المشائخ نے کی اور مولانا سید شاہ علی اکبر نظام الدین حسینی صابری نے نگرانی کی ۔ مولانا نے مزید کہا کہ دنیا کے سارے مسلم ممالک قادیانیوں کو کافر قرار دے چکے ہیں جبکہ قادیانیوں کو کافر ماننے کے سلسلہ میں چند نہیں بلکہ سارے ہی اسلامی ممالک متفق ہیں ۔ ان ممالک کے موقف کو حکومت ہند نے نظر انداز کردیا اور طلاق کے بارے میں ان چند ممالک کا حوالہ دیا جارہا ہے ۔ مولانا قاضی سید شاہ اعظم علی صوفی قادری نے اپنے صدارتی کلمات میں قرآنی ارشاد ’’ الطلاق مرتان ‘‘ کے حوالہ سے فرمایا کہ ایام جاہلیت اور اس کے فوری بعد کے ابتدائی دور میں رائج ظالمانہ طریقہ کو ختم کیا گیا ۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ احکام شریعت سے کھلواڑ کرنے والوں کی اصلاح کی جائے نہ کہ قانون شریعت میں تبدیل و ترمیم ہو ۔ مولانا سید شاہ علی اکبر نظام الدین حسینی صابری امیر جامعہ نظامیہ نے دستخطی مہم میں بھرپور انداز میں حصہ لینے پر زور دیا اور کہا کہ ایک طرف تو عصمت دری کے واقعات کے بعد مجرم کو موت کی سزا دینے کا مطالبہ کیا جاتا ہے جو ایک اسلامی حکم ہے ۔ دوسری طرف وہی لوگ اسلام کے دیگر احکام کو جو عین فطرت کے مطابق ہیں قبول کرنے کے بجائے شریعت میں مداخلت پر زور دیتے ہیں ۔ مولانا نے کہا کہ رولنگ پارٹی نے قبل از انتخابات اپنے منشور میں یکساں سیول کوڈ کے نفاذ کا بھی ذکر کیا تھا اب وہ اس پر عمل آوری کیلئے موقع تلاش کر رہی ہے ۔ مولانا سید محمد قبول پادشاہ قادری معتمد صدر مجلس علمائے دکن نے کہا کہ آج سے کوئی 30 برس قبل بھی یہ مسئلہ اٹھایا گیا تھا ۔ اس وقت تمام مسلمان یکجا ہوکر اس کے خلاف آواز اٹھائے تھے ۔ آج بھی مسلمانوں کے سارے مکاتب فکر کو متحدہ طور پر کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔ مولانا میر فراست علی شطاری ایڈوکیٹ سپریم کورٹ ، مولانا صوفی ذاکر علی دانش ایڈوکیٹ اور مولانا سید علی حسینی قادری نے اس مسئلہ کے قانونی و آئینی پہلوؤں پر روشنی ڈالی ۔ اس کے علاوہ مولانا سید شاہ اسرار حسین رضوی القادری ، مولانا سید شاہ محمد پادشاہ قادری زرین کلاہ ، مولانا سید ابراہیم حسینی قادری سجاد پادشاہ ، مولانا سید ظہیرالدین علی صوفی قادری ، مولانا سید اولیاء حسینی قادری مرتضی پادشاہ ، مولانا سید شاہ رضوان پادشاہ قادری لاؤبالی ، مولانا سید احمد الحسینی سعید قادری نے بھی مخاطب کیا ۔ مولانا قاری شاہ محمد مسعود احمد رضوی کی تلاوت کلام پاک سے اجلاس کا آغاز ہوا ۔ ہدیہ نعت کے بعد مولانا سید مصطفی سعید قادری نے رپورٹ پیش کی ۔ جلسہ کی کارروائی مولانا ڈاکٹر حافظ سید شاہ مرتضی علی صوفی قادری نے چلائی ۔ مولانا شاہ محمد فیض اللہ عبدالباری نے انتظامات کی نگرانی کی ۔ آخر میں مولانا سید شاہ احمد نوراللہ حسنی حسینی قادری معتمد معمومی جمعیتہ نے اجلاس میں شریک معزز مشائخ و علماء کا شکریہ ادا کیا ۔ اس موقع پر مشائخ و علماء قابل ذکر مولانا خواجہ بہاء الدین نقشبندی ، مولانا احمد عبدالحکیم صدیقی قادری مقتدری ، مولانا افضل مرزا چشتی شمیم پادشاہ ، مولانا سید محمد قادری افتخار پادشاہ صدر انجمن قادریہ ، مولانا سید عبداللہ حسینی بخاری ، مولانا سید شاہ ندیم اللہ حسینی ، مولانا سید شاہ محمد رضوی ارشد ، مولانا سید فرید پاشاہ قادر شرفی ، مولانا مجاہد میاں ، مولانا سید عبدالقادر حسینی جیلانی پادشاہ ، مولانا سید شاہ بندگی پادشاہ ریاض قیادری ، مولانا طالب الدین طاہر ، مولانا محمد احمد اللہ چشتی ، مولانا شوکت علی صوفی ، مولانا جابر چشتی بندہ نوازی ، مولانا خواجہ محمد انور اللہ صدیقی ، مولانا احمد اللہ اقبال چشتی ، مولانا عبدالحکیم اعجاز پادشاہ ، مولانا ڈاکٹر عبدالقدیر محمد صدیقی ، مولانا سید شاہ محی الدین قادری مبشر پادشاہ ، مولانا سید فصیح اللہ قادری نظام بابا ، مولانا مجاہد حسین حافظی، مولانا سیدخلیل ا حمد قادری ، مولانا سید اشفاق الدین احمد چشتی قادری ، مولانا سید شاہ نقی الدین قادری احمد پادشاہ ،مولانا سید غلام ربانی ، مولانا سید شاہ احمد پادشاہ قادری ملتانی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT