Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / شرعی قوانین کیخلاف سازشیں ، عوام اور نوجوان نسل چوکنا رہیں

شرعی قوانین کیخلاف سازشیں ، عوام اور نوجوان نسل چوکنا رہیں

پروپگنڈہ کا شکار ہونے سے بچانے مسلمانوں میں شعور بیداری کی ضرورت
حیدرآباد۔ 16اکٹوبر(سیاست نیوز) ملک میں شرعی قوانین کے خلاف سازشیں عروج پر ہیں مسلمان ان سازشوں سے چوکنا رہیںاور نوجوان نسل کو گمراہ کن پروپگنڈہ کا شکار ہونے سے بچانے کیلئے ان میں شعور اجاگر کریں۔ ملک کے مختلف شہروں میں طلاق ثلاثہ کے مسئلہ پر خواتین بالخصوص نوجوان لڑکیوں کو گمراہ کرنے کیلئے پروپگنڈہ شروع ہو چکا ہے اور انہیں یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کے لئے یہ مہم جاری ہے اور اس کے خلاف اسلامی شریعت میں مداخلت کے نام پر غلط پروپگنڈہ کیا جا رہا ہے۔ اسلامی اصولوں کے خلاف جاری اس پروپگنڈہ سے نسل نو کو محفوظ رکھنے کیلئے ضروری ہے کہ علماء اپنی ذمہ داری محسوس کرتے ہوئے ان کالجس اور تعلیمی اداروں کا رخ کریں جہاں لڑکیوں کو ترقی پسند معاشرے کے نام پر غلط باور کیا جانے لگا ہے۔ شریعت میں مداخلت کے لئے کوشاں طاقتیں ہر اس ذریعہ کا استعمال کر رہی ہیں جس کے ذریعہ عوام تک رسائی حاصل کرتے ہوئے انہیں حقوق کی دہائی دیکر گمراہ کیا جا سکتا ہے۔ دینی تعلیمات سے بے بہرہ نوجوان نسل کو بہ آسانی گمراہ کیا جانے لگا ہے اسی لئے یہ ضروری ہے کہ نوجوان نسل اور خواتین کو اس مہم سے جوڑتے ہوئے انہیں شریعت محمدیﷺ سے واقف کرواتے ہوئے انہیں اس پروپگنڈے کا شکار ہونے سے بچایا جائے۔ ملک بھر میں موضوع بحث بنائے گئے مسئلہ طلاق ثلاثہ اور تعدد ازواج پر ذرائع ابلاغ بالخصوص ٹیلی ویژن چیانلس کے ذریعہ یہ دکھانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ طلاق کے ذریعہ لڑکیوں اور خواتین کی زندگیاں برباد ہو رہی ہیں اسی لئے طلاق ثلاثہ اور تعدد ازواج پر پابندی عائد کی جانے کی ضرورت ہے۔ خواتین کے حقوق کی آڑ میں کی جا رہی ان کوششوں کے مقابلہ کے لئے ضروری ہے کہ نوجوان نسل کو باشعور بناتے ہوئے انہیں شرعی قوانین کی اہمیت سے واقف کروایا جائے کیونکہ یہ ان کے ایمان کا مسئلہ ہے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے بموجب کالجس اور تعلیمی اداروں میں یہ ماحول تیار کیا جانے لگا ہے کہ لڑکیوں کو ان کے حقوق کے نام پر طلاق ثلاثہ اور تعدد ازواج پر پابندی کی تائید کروائی جائے ۔ ہندستانی معاشرے میں اس طرح کی مہم کو آسانی سے کامیاب بنایا جا سکتا ہے اور اس مہم کو کامیاب بنانے کیلئے ایسے لوگوں کی مدد حاصل کی جا رہی ہے جو لوگ بظاہر دیندار ہے ںلیکن در حقیقت ان کا شمار دین بیزار لوگوں میں ہوتا ہے اور وہ راست نہیں بالواسطہ طور پر طلاق ثلاثہ اور تعدد ازواج پر پابندی عائد کرنے کی تائید کرنے لگے ہیں۔ نوجوانوں کو گمراہ کرنے کے لئے چلائی جانے والی اس مہم کے سلسلہ میں آن لائن پیٹیشن بھی شروع کی جا چکی ہے اور انٹرنیٹ کے ذریعہ بھی اس بات کو فروغ دیا جا رہا ہے کہ ملک میں یکساں سیول کوڈ نافذ کیا جانا چاہئے علاوہ ازیں آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی جانب سے اختیار کردہ موقف کی مخالفت کرتے ہوئے بھی آن لائن پیٹیشن چلائی جارہی ہے اور لاء کمیشن آف انڈیا کے سوالنامہ کا جواب دینے کی سمت راغب کیا جانے لگا ہے۔

TOPPOPULARRECENT