Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / ششی کلا کو انا ڈی ایم کے ارکان اسمبلی نے لیڈر منتخب کرلیا

ششی کلا کو انا ڈی ایم کے ارکان اسمبلی نے لیڈر منتخب کرلیا

چیف منسٹر کی حیثیت سے کل حلف برداری‘ ٹاملناڈو میں ڈرامائی تبدیلی
چینائی ۔ 5فبروری ( سیاست ڈاٹ کام) ٹاملناڈو کی خاتون آہن آنجہانی جیہ للیتا کے ساتھ تقریباً تین دہائیوں تک سائے کی طرح رہنے والی ان کی بااعتماد سہیلی وی کے ششی کلاء کو آج اے آئی انا ڈی ایم کے لیجسلیچر پارٹی کی لیڈر منتخب کرلیا گیا جس کے ساتھ ہی اب ان کا چیف منسٹر بننا یقینی ہوگیا ہے ۔ اس ماہ قبل وہ اس پارٹی کی سکریٹری جنرل منتخب کی گئی تھیں ۔ وی کے ششی کلا توقع ہے کہ منگل کو اپنے نئے عہدہ کا حلف لیں گی ۔ وہ دو ماہ کے دوران اس ریاست کی تیسری چیف منسٹر ہوں گی ۔ چیف منسٹر اور پنیراسلوم نے انا ڈی ایم کے لیجسلیچر پارٹی کی سربراہ کی حیثیت سے 62سالہ ششی کلاء کا نام تجویز کیا ۔ لیڈر کے انتخاب کیلئے پارٹی ہیڈ کوارٹرز میں ارکان اسمبلی کا اجلاس منعقد ہوا تھا ۔ حکمراں جماعت کے ارکان اسمبلی نے انہیں متفقہ طور پر اپنی لیڈر منتخب کرلیا جس کے ساتھ ہی پنیراسلوم سے عنان اقتدار حاصل کرنے کی راہ ہموار ہوگئی ۔ ششی کلاء جو چنماں ‘ ( چھوٹی ماں) بھی کہلائی جاتی ہیں جیسے ہی آج انا ڈی ایم کے پارٹی ہیڈ کوارٹرز پہنچیں پنیراسلوم اور دوسروں نے ان کا پرتپاک استقبال کیا ۔ تیز رفتار سیاسی تبدیلیوں کے درمیان پارٹی اجلاس کے انعقاد سے قبل پنیراسلوم نے آنجہانی جیہ للیتا کی رہائش گاہ پہنچ کر وہاں مقیم چنماں سے ملاقات کی ۔ لیجسلیچر پارٹی کی سربراہ کا عہدہ قبول کرنے کے بعد ارکان اسمبلی سے ششی کلاء نے اپنے مختصر خطاب میں کہا کہ ’’ جیہ للیتا کے انتقال کے بعد وہ پنیرا سلوم ہی تھے جنہوں نے مجھے جنرل سکریٹری اور چیف منسٹر کا عہدہ قبول کرنے کی ترغیب دی تھی ‘‘ ۔ ششی کلاء نے کہا کہ ’’ اس تبدیلی نے ہمارے ان مخالفین کی امیدوں پر پانی پھیر دیا جو یہ سمجھ رہے تھے کہ ہماری اماں ( جیہ للیتا) کے انتقال کے بعد اس پارٹی میں پھوٹ پڑ جائے گی ‘‘ ۔ششی کلئا نے موجودہ چیف منسٹر پنیرا سلوم کی بھرپور ستائش کی اور کہا کہ پارٹی کو جب کبھی دشواریوں کا سامنا رہا ‘ جب کبھی اماں کے چیف منسٹر بننے میں مصیبتیں ڈالی گئیں ‘ یہ ہمارے عزیز بھائی پنیرا سلوم ہی تھے جو ہمیشہ وفادار رہے ‘‘ ۔ ششی کلاء نے کہا کہ انا ڈی ایم کے ٹاملناڈو کے عوام کی فلاح و بہبود کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی ۔

TOPPOPULARRECENT