Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / شعبہ صحت بُری طرح نظرانداز، وائٹ پیپر جاری کرنے محمدعلی شبیر کا مطالبہ

شعبہ صحت بُری طرح نظرانداز، وائٹ پیپر جاری کرنے محمدعلی شبیر کا مطالبہ

حیدرآباد 14 فروری (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے کہاکہ حکومت پر شعبہ صحت کو بُری طرح نظرانداز کررہی ہے اور اِس معاملہ میں وائٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔ اُنھوں نے ریاست بھر میں جبری آپریشن کا تقریباً 1500 کروڑ روپئے کا اسکام ہونے کا دعویٰ کیا۔ محمد علی شبیر نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ کئی ہاسپٹلس میں ڈاکٹرس اور دیگر عملہ کی جائیدادیں مخلوعہ ہیں، ادویات کی قلت پائی جاتی ہے۔ کھمم میں ڈینگو سے 30 افراد فوت ہوئے۔ سروجنی دیوی آئی ہاسپٹل میں غلط آپریشن کی وجہ 5 افراد بینائی سے محروم ہوگئے اور نیلوفر ہاسپٹل میں 5 حاملہ خواتین کی موت ہوئی۔ یہ سب واقعات حکومت کی غفلت و لاپرواہی کا نتیجہ ہے۔ ٹی آر ایس حکومت نے ہر اسمبلی حلقہ میں ایک جنرل اور ایک سوپر اسپیشالیٹی ہاسپٹل قائم کرنے کا وعدہ کیا تھا جس پر آج تک عمل نہیں ہوا۔ تلنگانہ کے 35 تا 45 فیصد خانگی ہاسپٹلس میں زبردستی آپریشنس کئے جارہے ہیں اور یہ تقریباً 1500 کروڑ روپئے کا اسکام ہے۔ خانگی ہاسپٹلس کی اِس لوٹ کھسوٹ پر حکومت خاموش تماشائی ہے۔

TOPPOPULARRECENT