Thursday , August 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / شمالی کرناٹک میں ٹرین کے ذریعہ پانی کی فراہمی کامنصوبہ

شمالی کرناٹک میں ٹرین کے ذریعہ پانی کی فراہمی کامنصوبہ

بنگلورو۔19اپریل:خشک سالی سے بدحال شمالی کرناٹک کے بعض اضلاع میں ہنگامی راحت کے طور پر پینے کا پانی ریل گاڑیوں کے ذریعہ فراہم کرنے پر ریاستی حکومت سنجیدگی سے غور کررہی ہے۔ گزشتہ ہفتہ مہاراشٹرا کے لاتور ضلع میں تاریخ میں پہلی مرتبہ ریل گاڑیوں کے ذریعہ 5 لاکھ لیٹر پانی کی بیک وقت سپلائی کی گئی۔ اس کے کامیاب نتائج کو دیکھتے ہوئے ریاستی حکومت بعض اضلاع میں اسی طرز پر پانی کی فراہمی یقینی بنانے پر غور کررہی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے اس سلسلے میں اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر سے بات چیت کی ہے اور دونوں نے اس ضمن میں مرکزی وزیر ریلویز سریش پربھو کو ایک مکتوب بھی روانہ کیا ہے۔ ریاست کو امسال تاریخ کی بد ترین خشک سالی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ شدید گرمی سے پریشان ریاست کی آبادی دوسری ریاستوں کی جانب رخ کررہی ہے۔ پانی کی قلت، جانوروں کیلئے چارہ کی قلت وغیرہ ایک سنگین مسئلہ بن گیا ہے۔ پانی کیلئے بھی لوگوں کو قطاروں میں گھنٹوں انتظار کرنا پڑرہا ہے۔ جس طرح لاتور میںٹرین کے ذریعہ پانی کی فراہمی کا کامیاب تجربہ کیاگیا۔ اس سلسلے کو ریاست میں آگے بڑھانے پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے۔ اس ٹرین کے ذریعہ جن مقامات پر پانی کی سربراہی درکار ہوان کی ایک فہرست روانہ کرنے کیلئے ریاستی انتظامیہ کی طرف سے تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی جاچکی ہے۔ ریاستی حکومت کی طرف سے یہ اشارہ دیا گیا ہے کہ خشک سالی سے انتہائی طور پر متاثر ہونے والے ان مقامات پرٹرین کے ذریعہ پانی مہیا کرایا جائے۔ گوکاک، کوپل، اتھنی، چکوڈی، ہبلی، دھارواڑ، یادگیر، بیدر، رائچور، بلاری کو کم از کم ہفتہ میں ایک دن پانی ریل کے ذریعہ مہیا کرایا جائیگا۔ اس دوران ساؤتھ ویسٹرن ریلوے کے افسران نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت کی طرف سے اگر پانی کی فراہمی کیلئے ایسی کوئی درخواست وصول ہوتی ہے تو ساؤتھ ویسٹرن ریلوے پانی مہیا کرانے کیلئے تیار ہے۔ ریاستی حکومت کے ساتھ تبادلہ خیال کے بعد ضرورت پڑنے پر لاتور کے طرز پر کرناٹک میں بھی پانی مہیا کرایا جائیگا۔

TOPPOPULARRECENT