Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / شمالی کوریا کو سبق سکھانے ایران کا حربہ استعمال کرنے ٹرمپ کا اشارہ

شمالی کوریا کو سبق سکھانے ایران کا حربہ استعمال کرنے ٹرمپ کا اشارہ

واشنگٹن ؍ وارسا ۔ 6 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) شمالی کوریا کے بالسٹک میزائیل لانچنگ نے ایسا معلوم ہوتا ہیکہ سب سے زیادہ امریکہ کو بوکھلا دیا ہے کیونکہ ایک طرف جہاں ہمبرگ میں G-20 چوٹی کانفرنس کا انعقاد ہورہا ہے، وہیں ٹرمپ انتظامیہ نے چین پر بھی اپنی برہمی کا اظہار کیا ہے اور اب وہ ایسی تحدیدات کے نفاذ پر غور کررہا ہے جس سے شمالی کوریا کیلئے رقمی حصول کا سلسلہ ہی بند ہوجائے اور نہ رہے بانس نہ بجے بانسری کے مصداق جب ملک کا خزانہ ہی خالی ہوجائے گا تو وہ نیوکلیئر پروگرام جاری نہیں رکھ سکے گا لیکن اس بار امریکہ نے چین کے کندھے پر بندوق رکھ کر چلانے کی کوشش کی ہے کیونکہ وہ چین کی کمپنیوں پر تحدیدات عائد کرنا چاہتا ہے جن سے شمالی کو ریا عرصہ دراز سے استفادہ کرتا آرہا ہے۔ یہ ایک ایسا حربہ ہے جو ماضی میں امریکہ نے ایران کے ساتھ آزمایا تھا اور ایران پر تحدیدات عائد کرنے کے بعد ہی ایران کی عقل ٹھکانے آگئی تھی اور وہ اپنے نیوکلیئر پروگرام پر بات چیت کی میز پر آنے تیار ہوا تھا۔ امریکہ نے صرف یہاں تک ہی بات کو محدود نہیں رکھا ہے بلکہ اب وہ شمالی کوریا کے خلاف فوجی کارروائی کرنے پر بھی غوروخوض کررہا ہے۔ نیوکلیئر بالسٹک میزائل کی لانچنگ کے بعد امریکہ نے چین اور روس دونوں کو اپنی برہمی سے آگاہ کردیا ہیکہ کس طرح شمالی کوریا کا یہ دونوں ممالک ’’ہاتھ تھامے‘‘ ہوئے ہیں۔ اسی دوران اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی نے سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں کہا تھا کہ شمالی کوریا کے بالسٹک میزائل کی لانچنگ کے بعد یہ دنیا اب مزید خطرناک ہوگئی ہے۔ لانچنگ کا دن ایک سیاہ دن تھا جس سے یہ ظاہر ہوتا ہیکہ شمالی کوریا پرامن دنیا کا حصہ بننا نہیں چاہتا۔ ایک طرف جہاں یہ باتیں چل رہی ہیں تو دوسری طرف امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اپنے الجھن پیدا کرنے والے بیانات کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں جن میں ان کے دورہ وارسا کے دوران دیئے گئے بیان کو اہمیت دی جارہی ہے جہاں انہوں نے کہا تھا کہ 2016ء کے صدارتی انتخابات میں روس نے مداخلت کی ہوگی لیکن یہ بات دیگر ممالک کے بارے میں بھی کہی جاسکتی ہے۔ میں نے اس جملے کو بڑی آسانی سے ادا کردیا ہیکہ روس مداخلت کرنے والا ملک ہے لیکن دوسرے ممالک کا ملوث ہونا بھی خارج از امکان نہیں۔ بہرحال اس معاملہ میں کوئی بھی بات وثوق سے نہیں کہی جاسکتی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT