Thursday , April 27 2017
Home / Top Stories / شمالی کوریا کی جانب سے متعدد میزائیل تجربے کامیاب

شمالی کوریا کی جانب سے متعدد میزائیل تجربے کامیاب

اقوام متحدہ اور عالمی طاقتوں کی دھمکیاں نظرانداز ، جنوبی کوریا اور امریکہ میں تشویش کی لہر

سیول ۔6 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) شمالی کوریا نے اقوام متحدہ کی پابندیوں اور بڑی عالمی طاقتوں کی دھمکیوں کی دھجیاں اُڑاتے ہوئے آج متعدد ’’ممنوعہ‘‘ بیلسٹک میزائیلوں کا کامیاب تجربہ کیا جو 1000 کیلومیٹر (620 میل ) تک اپنے نشانوں پر وار کرسکتے ہیں۔ جنوبی کوریا کی فوج نے کہا کہ پڑوسی کمیونسٹ ملک نے اپنے مشرقی سمندری ساحل پر تجربہ کیا ہے جو امریکہ اور جنوبی کوریا کی بڑی فوجی مشقوں پر اس کا ردعمل ہے۔ پیانگ یانگ کا اصرار ہے کہ واشنگٹن اور سیول اس پر قبضہ کیلئے یہ مشقیں کررہے ہیں۔ تاہم فوری طورپر یہ واضح نہیں ہوسکا کہ ان میزائیلوں کی نوعیت کیا تھی اور ان کی صحیح مقدار کیا ہوسکتی ہے ۔ قبل ازیں شمالی کوریا گزشتہ ماہ بھی کئی سلسلہ وار بیلسٹک میزائیل تجربے کرچکا ہے۔ دراصل اس کے حکمراں کم جونگ ان کی پالیسی کا بنیادی حصہ ہے ۔ کم جونگ ان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے علاوہ بڑی عالمی طاقتوں کی دھمکیوں کی پرواہ کئے بغیر اپنے ملک کے نیوکلیئر اور میزائیل پروگرام کو پوری شدت اور تیزی کے ساتھ آگے بڑھارہے ہیں جو بقول ان کے امریکہ اور جنوبی کوریا کی شمالی کوریا کے خلاف دشمنی و مخاصمت کا موثر جواب دے سکتی ہے ۔ سیول اور واشنگٹن نے جزیرہ نما کوریا میں فوجی مشقیں منظم کئے ہیں ۔ یہ علاقہ تکنیکی اعتبار سے ہنوز حالت جنگ میں ہے کیونکہ دو پڑوسی ملکوں کے درمیان 1950-53 لڑی گئی جنگ کسی امن سمجھوتہ سے ختم نہیں ہوئی تھی بلکہ عارضی طورپر ختم تصور کی جاتی ہے ۔شمالی کوریا ان فوجی مشقوں کے ضمن میں مصروف ہے جو اپریل تک جاری رہیں گی اور فوجی تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اس غریب کمیونسٹ ملک کو اپنے طورپر بھاری مصارف کے ساتھ ازخود مشقیں منظم کرنا ہوگا۔ شمالی کوریائی عوامی فوج کے جنرل اسٹاف کے ایک غیرشناخت شدہ ترجمان نے گزشتہ ہفتہ کہا تھا کہ واشنگٹن اور سیول کی مشترکہ فوجی مشقوں کے جواب میں پیانگ یانگ کا ردعمل اب تک کا سب سے زیادہ طاقتور اور سخت ترین ہوگا ۔ لیکن انھوں نے اس کی تفصیلات بیان نہیں کیا تھا ۔ شمالی کوریا نے فروری میں دو وسط فاصلاتی میزائیل تجربہ کیا تھا اور گزشتہ سال دو نیوکلیئر تجربے بھی کئے گئے تھے ۔ اس بات پر کافی پریشانی پھیلی ہوئی ہے کہ شمالی کوریا آئی سی بی ایم تجربہ بھی کرسکتا ہے جو اگر کامیاب ہوتا ہے تو اس کا مطلب یہ ہوگا کہ شمالی کوریا کے میزائیل امریکی ساحلوں تک پہونچ سکتے ہیں جنھیں امریکہ اپنی سلامتی کیلئے سب سے بڑا خطرہ تصور کرتا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT