Sunday , August 20 2017
Home / دنیا / شمال مشرقی شام میں بم دھماکوں سے 8افراد ہلاک

شمال مشرقی شام میں بم دھماکوں سے 8افراد ہلاک

مہلوکین میں3عیسائی اور زخمیوں میں 15عیسائی شامل ‘کردوں کو امریکی تائید میں اضافہ
قمیشلی( شام ) ۔22مئی ( سیاست ڈاٹ کام )  بم دھماکوں سے جو مشتبہ دولت اسلامیہ کارکنوں نے کئے تھے کم از کم 8افراد شمالی مشرقی شام میں ہلاک ہوگئے جب کہ چند گھنٹوں بعد ایک اعلیٰ سطحی امریکی کمانڈر نے اس علاقہ کا دورہ کیا ۔ امریکہ کُرد زیر قیادت نیم فوجی تنظیم جس کے قبضہ میں شمال مغرب کا بیشتر شامی علاقہ شامل ہے‘ انتہائی موثر لڑاکا فوج سمجھتا ہے جو شام میں دولت اسلامیہ کے خلاف جنگ کرسکتی ہے ۔ امریکہ کے مرکزی کمانڈ کے جنرل جوزف اوٹل نے کل انتہائی خفیہ دورہ کیا تھا تاکہ امریکی فوج کے ان کے ساتھ کام کرنے والے دفاعی مشیروں کو اعزاز عطا کیا جائے ۔ سینٹ کام کے ترجمان نے  اس دورہ کی مزید تفصیلات کا انکشاف کرنے سے انکار کرتے ہوئے صرف اتنا کہا کہ جنرل اوٹل نے کئی مقامات کا شام میں دورہ کیا ہے ۔ یہ امریکہ کے کسی اعلیٰ سطحی عہدیدار کا 2011ء میں خانہ جنگی کے آغاز کے بعد اولین دورہ ہے ۔ دو دولت اسلامیہ کے خودکش بم برداروں نے قمیشلی کے قلب میں حملے کئے ۔ خاص طور پر کردوں کے شہر میں جو شمالی شام کے وسیع علاقوں کا متبادل دارالحکومت ہے جہاں کُرد نیم فوجی تنظیم نے خود ساختہ خودمختار انتظامیہ قائم کررکھا ہے ۔ خودکش بم برداروں نے ایک رسٹورنٹ اور ایک بیکری پر حملہ کیا جو شہر کے پڑوسی عیسائی علاقہ میں قائم ہیں اور علحدگی اختیار کرنے والی نیم فوجی عیسائی تنظیم کے زیر اثر ہے جسے حکومت شام کی تائید حاصل ہے ۔ نیم فوجی تنظیم کے بموجب خودکش بم حملوں سے تین عیسائی ہلاک اور دیگر 15 زخمی ہوگئے ۔ دولت اسلامیہ سے ملحق خبررساں ادارہ ’عماق‘ نے اطلاع دی کہ بم حملوں کی ذمہ داری کسی نے بھی قبول نہیں کی ۔ عماق نے کہا کہ خود کش حملہ آور کو کرد فوج کے 12سے زیادہ فوجیوں نے گولی مار کر ہلاک کردیا ۔ تاہم کُرد فوج نے کوئی دعویٰ نہیں کیا ہے ۔ کرد نیم فوجی تنظیم کی امریکی تائید میں اضافہ ہوگیاہے ۔

TOPPOPULARRECENT