Wednesday , May 24 2017
Home / Top Stories / شمال مشرق میں بنیاد پرستی سے دہشت گردی کا خطرہ

شمال مشرق میں بنیاد پرستی سے دہشت گردی کا خطرہ

علاقہ کے ڈی جی پیز و چیف سکریٹریز کی کانفرنس، راج ناتھ سنگھ کا خطاب

نئی دہلی 16 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج مذہبی بنیادی پرستی ایک سنگین سکیوریٹی خطرہ ہے اور اگر اس پر بروقت قابو نہیں پایا گیا تو اس سے دہشت گردی کو فروغ ملتا ہے ۔ راج ناتھ سنگھ نے شمال مشرقی علاقہ کے ڈائرکٹرس جنرل آف پولیس اور چیف سکریٹریز کے ساتھ علاقہ کی سکیوریٹی صورتحال کا جائزہ لیا اور علاقہ میں غیر قانونی ہتھیاروں کے پھیلاؤ پر تشویش کا اظہار کیا ۔ انہوں نے پولیس سربراہان سے کہا کہ وہ اسلحہ کے اسمگلرس کے خلاف منظم کارروائی کا آغاز کریں۔ وزیر داخلہ نے اس اجلاس میں کہا کہ اگر ہم مستقبل کے سکیوریٹی خطرات کی بات کریں تو خاص طور پر بنیاد پرستی ایک بڑا سکیوریٹی چیلنج بن گئی ہے ۔ بنیاد پرستی ایک بین قومی مسئلہ ہے ۔ اگر ہم اس کو روک نہیں پائیں گے تو یہ دہشت گردی میں بدل جائے گی ۔ اس اجلاس میں قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول اور دوسرے اعلی سکیوریٹی عہدیداران بھی موجود تھے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ شمال مشرق کا علاقہ چونکہ بنیادی پرستی کی کوششوں سے متاثر ہوسکتا ہے اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ ایسا کرنے والوں کی نشاندہی کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ کچھ ایجنٹس کو بیرونی فنڈنگ بھی مل رہی ہے ۔ ایسے میں یہ ضروری ہے کہ ان کی بیرونی فنڈنگ اور اس کے استعمال پر بھی نظر رکھی جائے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ حالانکہ شمال مشرق کا بیشتر علاقہ تخریب کاری سے پاک ہے لیکن غیر قانونی اسلحہ کا پھیلاؤ ایک ایسا مسئلہ ہے جس کو حل کرنے کی ضرورت ہے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ کچھ ایجنٹس مذہب کے نام پر سرگرم ہیں اور کچھ ایجنٹس این جی او کے نام پر کام کر رہے ہیں ضرورت اس بات کی ہے کہ ان کی سرگرمیوں پر نظر رکھی جائے اور مناسب کارروائی کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ بڑے پیمانے پر ہتھیاروں کا پھیلاؤ مزید جرائم کی وجہ بن سکتا ہے ۔ وہ ڈائرکٹرس جنرل پولیس سے خواہش کرتے ہیں کہ ایک منظم مہم چلائی جائے اور ہتھیاروں کے ان تاجروں کے خلاف کارروائی کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اسلحہ ‘ منشیات اور جعلی ہندوستانی کرنسی نوٹس ہندوستان میں بین الاقوامی سرحد سے اسمگل کئے جا رہے ہیں اور انہیں شمال مشرق میں استعمال کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایسی سرحدات ہیں جہاں کوئی نگرانی نہیں ہے ۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ سحردی علاقوں میں مزید پولیس اسٹیشنس قائم کئے جائیں اور اس کے نتیجہ میں جرائم کی روک تھام ہوسکتی ہے اور مقامی عوام میں سلامتی اور تحفظ کا احساس پیدا ہوسکتا ہے ۔ وزیر داخلہ نے تاہم کہا کہ گذشتہ چند برسوں میں شمال مشرقی علاقوں میں سکیوریٹی کی صورتحال میں واضح بہتری پیدا ہوئی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT