Wednesday , September 20 2017
Home / دنیا / شنگھائی کوآپریشن آرگنائزیشن میں ہندوپاک کی شمولیت کا امکان

شنگھائی کوآپریشن آرگنائزیشن میں ہندوپاک کی شمولیت کا امکان

بیجنگ ۔ 10 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چین کی قیادت میں قزاقستان میں منعقد شدنی شنگھائی کوآپریشن آرگنائزیشن کے سیکوریٹی میں ہندوپاک کو اس کے رکن ممالک کے طور پر شامل کیا جاسکتا ہے۔ سکریٹری جنرل رشید المیوف نے سیناویبو پر اپنا بیان جاری کرتے ہوئے یہ بات کہی جو چین میں ٹوئیٹر کے مماثل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایس سی او چوٹی کانفرنس آستانہ میں منعقد کی جائے گی جہاں آرگنائزیشن کے ساتویں اور آٹھویں رکن ممالک کا خیرمقدم کرنا ہمارے ایجنڈہ میں شامل ہے۔ یاد رہیکہ ایس سی او کی داغ بیل 2001ء میں ڈالی گئی تھی اور اس کا ہیڈکوارٹر چین کے دارالخلافہ بیجنگ میں ہے۔ یہ ایک سیاسی و سیکوریٹی نوعیت کی تنظیم ہے جس کے دیگر ارکان میں چین، روس، قزاقستان، ازبکستان، تاجکستان اور کرغستان شامل ہیں جس کا مقصد رکن ممالک کے درمیان فوجی تعاون، انٹلیجنس کی معلومات کا تبادلہ، وسطی ایشیاء میں دہشت گردی کے خلاف لڑائی اور سائبر دہشت گردی کے خلاف مشترکہ کارروائی کرنا شامل ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کی شمولیت سے آرگنائزیشن مزید مستحکم ہوجائے گی جبکہ فی الحال افغانستان، بیلاروس، ہندوستان، ایران، منگولیا اور پاکستان کو صرف ’’مشاہدین‘‘ کو موقف حاصل ہے۔

TOPPOPULARRECENT